مورخہ : 15.6.2016 بروز بدھ

بین الاقوامی سازش کے تحت خطے میں آگ اور خون کے کھیل کا آغاز کیا جا رہا ہے،زاہد خان
افغانی اور پاکستانی ایک دوسرے کے خون کے پیاسے بننے کی بین الاقوامی سازش کا حصہ نہ بنیں
افغانستان اور پاکستان کسی بین الاقوامی ثالث کے بغیر براہ راست غلط فہمیوں کے ازالے کیلئے عملی اقدامات اُٹھائیں

پشاور ( پ ر ) بین الاقوامی سازش کے تحت پاکستان اور افغانستان کے تعلقات میں بگاڑ پیدا کر کے ایک بار پھر خطے میں آگ اور خون کے کھیل کا آغاز کیا جا رہا ہے جس پر افغانستان اور پاکستان کی حکومتیں اور قیادتیں گہری نظر رکھیں ۔ بین الاقوامی آلہ کاری میں دونوں ممالک کے بنیادی ڈھانچے کی تباہی کے علاوہ لاکھوں شہریوں کی جانیں ضائع ہوئیں۔ صدیوں سے خونی رشتوں میں جڑے ہوئے افغانی اور پاکستانی ایک دوسرے کے خون کے پیاسے بننے کی بین الاقوامی سازش کا حصہ نہ بنیں۔ ان خیالات کا اظہار اے این پی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہد خان نے اپنے بیان میں کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ طورخم بارڈر پر دونوں افواج میں کشیدگی غیر مناسب ہے۔ تاریخ میں پہلی بار افغانستان اور پاکستان کی افواج کا آمنا سامنا درست نہیں دونوں ممالک کو اپنی جاری پالیسیوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے خطے کے کروڑوں عوام اوربالخصوص افغانستان اور پاکستان کے شہریوں کے مستقبل کو مدنظر رکھنا چاہیے۔ عوامی نیشنل پارٹی خبردار کرتی ہے کہ ماضی کی طرح بین الاقوامی قوتیں پاکستان اور افغانستان کے درمیان اُلجھاؤ کے ذریعے اپنے مقاصد کی تکمیل کریں گی۔ خطے میں مستقل امن کے قیام کیلئے ضروری ہے کہ افغانستان اور پاکستان کسی بین الاقوامی ثالث کے بغیر براہ راست غلط فہمیوں کے ازالے کیلئے عملی اقدامات اُٹھائیں۔ ڈالر فساد کی طرح ایک بار پھر بین الاقوامی فسادی قوتوں کی مشترکہ سرمایہ کاری افغانستان اور پاکستان کا ناقابل برداشت نقصان کردیں گی۔ زاہد خان نے قومی قیادت سے مطالبہ کیا کہ افغانستان اور پاکستان کی سرحدوں پر شدید کشیدگی کے خاتمے کیلئے آگے بڑھیں۔ پاکستان میں کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں پر پابندی لگائی جائے اور افغانستان بھی اپنے ملک میں موجود انتہا پسند تنظیموں کے خلاف کارروائی کرے۔