مورخہ : 16.6.2016 بروز جمعرات

اے این پی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی کی مردان نوشہرہ روڈ پر دھماکے کی مذمت
خیبر پختونخوا میں دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے باوجود نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد نہیں ہو رہا
سیکورٹی اہلکاروں کو صرف اس لئے ٹارگٹ کیا جا رہا ہے کہ وہ دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں۔

پشاور( پریس ریلیز ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی نے مردان نوشہرہ روڈ پر مسیتی پھاٹک میں ہونے والے دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس میں زخمی ہونے والے اہلکار کی جلد صحت یابی کی دعا مانگی ہے ہوتی ہاؤس مردان سے جاری کرہ ایک مذمتی بیان میں ا میرحیدرخان ہوتی نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے باوجود نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد نہیں ہو رہا جس کی وجہ سے مستقبل میں بڑی تباہی کے امکانات نظر آ رہے ہیں انہوں نے کہا کہ سیکورٹی اہلکاروں کو صرف اس لئے ٹارگٹ کیا جا رہا ہے کہ وہ دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں صوبائی صدر نے کہاکہ ہماری پولیس اور فورسسز جس بہادری کے ساتھ دہشت گردوں کے آگے سیسہ پلائی دیوار بنی ہوئی ہے وہ لائق تحسین ہے اورپوری قوم ان کے شانہ بشانہ ہے انہوں نے دھماکے میں زخمی ٹریفک اہلکار محمد ارشاد کی بہادری اورجرآت کوسراہتے ہوئے کہاکہ دھماکے میں زخمی ہونے کے باوجود وہ اپنی پوزیشن پر موجود رہے امیرحیدرخان ہوتی نے زخمی اہلکار کی جلد صحت یابی کی دعا کرتے ہوئے پولیس حکام اورزخمی کے خاندان سے بھرپور یکجہتی کا اظہارکیاہے انہوں نے کہاکہ دہشتگرد کسی طور انسان کہلانے کے لائق نہیں ان کے مکروہ چہرے بے نقاب ہو چکے ہیں ، اے این پی کے صوبائی صدر نے کہا کہ دہشت گرد بوکھلاہٹ کے عالم میں ایسی مذموم کاروائیاں کر رہے ہیں تاہم حکومت کو چاہئے کہ انسانیت سوز کاروائیوں میں ملوث عناصر کی گرفتاری اور دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے ختم کرنے کیلئے ٹھوس اور سنجیدہ اقدامات کرے اور عوام کی جان و مال کی حفاظت کو یقینی بنایاجائے ۔