مورخہ : 23.6.2016 بروز جمعرات

اسفندیار ولی خان اور میاں افتخار حسین کی امجد صابری کے قتل کی مذمت
کراچی میں دہشت گرد منظم ہو چکے ہیں ،سازش کے تحت حالات خراب کئے جا رہے ہیں۔

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفند یار ولی خان اور مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے کراچی میں نامور قوال اور فنکار امجد صابری کی ٹارگٹ کلنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے غمزدہ خاندانون سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا ہے ، اے این پی سیکرتریٹ سے جاری اپنے ایک مذمتی بیان مین دونون پارٹی رہنماؤں نے کہا کہ اُن کی شہادت سے گائیکی کی دُنیا کاایک معروف باب ہمیشہ کیلئے بند ہو گیاہے اور اُن کی شہادت قوم کیلئے ایک بہت بڑا سانحہ ہے۔اُنہوں نے کہا کہ دہشتگردی کا جن بوتل سے باہر آ چکا ہے اور آئے روز ہونے والے دہشت گردی کے واقعات نے سیکورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان کھڑا کر دیا ہے ، انہوں نے کہا کہ اس افسوسناک واقعے کے بعد یہ ثابت ہو گیا ہے کہ دہشتگرد پھر سے منظم ہو گئے ہیں اور ایک سازش کے تحت کراچی کے حالات خراب کیے جا رہے ہیں تاہم حکومت کو ان معاملات کا سنجیدگی سے نوٹس لینا چاہیے۔اُنہوں نے کہا کہ یہ واقعہ امن و امان کے حوالے سے حکومت کی کارکردگی کا منہ چڑا رہا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت امن و امان کے قیام پر توجہ دے اورحملہ آوروں کو فوری گرفتار کر قانون کے کٹہرے میں لایا جائے۔انہوں نے شہید کی مغفرت اور لواحقین کے صبر جمیل کیلئے بھی دعا کی۔
دریں اثناء اسفندیار ولی خان اور میاں افتخار حسین نے یکہ توت میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعے میں سابق اے پی اے نواب صافی کے قتل پر بھی دکھ اور افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ صوبائی حکومت نے ٹارگٹ کلرز کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے اور شہریوں کو قاتلون کے رحم و کرم پر چھوڑ کر حکمران چین کی بانسری بجا رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ صوبائی ھکومت کو زبانی جمع خرچ سے نکل کر بھتہ خوروں ٹارگٹ کلرز اور ڈاکو ؤں کے خلاف کاروائی کرنا ہو گی تا کہ شہریوں کی جان و مال کا تحفظ یقینی بنایا جا سکے۔