2016 اے این پی کو پشتونوں کے حقوق کی جدوجہد کی پاداش میں ہر دور میں دیوار سے لگایا گیا۔سردار حسین بابک

اے این پی کو پشتونوں کے حقوق کی جدوجہد کی پاداش میں ہر دور میں دیوار سے لگایا گیا۔سردار حسین بابک

اے این پی کو پشتونوں کے حقوق کی جدوجہد کی پاداش میں ہر دور میں دیوار سے لگایا گیا۔سردار حسین بابک

15.1.2016 anp pic

مورخہ : 15.1.2016 بروز جمعہ

 اے این پی کو پشتونوں کے حقوق کی جدوجہد کی پاداش میں ہر دور میں دیوار سے لگایا گیا۔سردار حسین بابک
امن کیلئے ہماری بے مثال قربانیوں کے باوجود 2013 کے الیکشن میں ہمیں عوام کی نمائندگی سے محروم رکھا گیا۔
اب ہمارے مخالفین بھی اعتراف کر رہے ہیں کہ امن، علاقائی تعلقات اور صوبوں کے حقوق جیسے ایشوز پر ہمارا موقف حقائق پر مبنی رہا ہے۔
سن 2018 ء کے الیکشن سے قبل ٹکٹوں کی تقسیم میں کارکنوں کی رائے اور مینڈیٹ کو بنیادی اہمیت حاصل ہوگی۔
اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ کے اجلاس سے خطاب

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری اور پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ وقت اور حالات نے بار بار یہ بات درست ثابت کر دی ہے کہ صوبے اور پشتونوں کے اجتماعی مفادات کے تحفظ کی ذمہ داری اے این پی ہی نبھاتی آئی ہے اور اس جدوجہد کی پاداش میں پارٹی کو ہر دور میں دیوارسے لگایا گیا تاہم اب حالات بدل گئے ہیں اور اب ہمارے مخالفین بھی ہمارے طرز سیاست اور نظریات کا اعتراف کرنے لگے ہیں۔
باچا خان مرکز پشاور میں اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ کے زیر اہتمام باچا خان اور ولی خان کی برسی کی مناسبت سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ اے این پی تمام تر رکاوٹوں اور مشکلات کے باوجود پشتونوں کے حقوق اور خطے کے امن ، ترقی کیلئے باچا خان اور ولی خان کے نظریات پر مبنی اپنی جدوجہد آگے لیکر بڑھ رہی ہے۔ اسی جدوجہد کا نتیجہ ہے کہ آج ہمارے مخالفین بھی کھلے عام اعتراف کرنے لگے ہیں کہ امن ، علاقائی تعلقات اور صوبوں کے حقوق جیسے ایشوز پر اے این پی کا موقف حقائق پر مبنی رہا ہے اور کاریڈور کے معاملے کے دوران بھی یہ بات پھر درست ثابت ہوئی کہ ہمارے ساتھ زیادتی کی جاتی رہی ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ مختلف الخیال قوتیں صوبے کے حقوق کے معاملے پر مشترکہ حکمت عملی پر متفق ہوگئی ہیں اور کاریڈور کے ایشو پر مشترکہ حکمت عملی کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ امن کے قیام کیلئے اے این پی کی قربانیاں بے مثال رہی ہیں تاہم یہ بات قا بل افسوس ہے کہ ہماری قربانیوں کے اعتراف کی بجائے ہمیں 2013 کے الیکشن میں دیوار سے لگایا گیا اور ہمیں عوام کی موثر نمائندگی سے محروم رکھا گیا۔ اس کے باوجود پارٹی نے ہر اہم معاملے پر پشتونوں کے حقوق کے تحفظ کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھی۔
اُنہوں نے کہا کہ کرپشن کے نام پر اے این پی کو ہراساں کرنے کا مقصد بھی بدنیتی پر مبنی ہے اور اس قسم کا تاثر دیا جا رہا ہے جیسے 65 سال کے دوران صرف اے این پی ہی حکومت کا حصہ رہی ہو۔ اُنہوں نے کہا کہ ان تمام سازشوں اور منفی ہتھکنڈوں کا عوامی قوت کے ساتھ ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا۔ اُنہوں نے کہا کہ پارٹی میں نظریاتی کارکنوں کی رائے کو بنیادی اہمیت دی جا رہی ہے اور اگلے الیکشن میں ان اُمیدواروں کی حوصلہ افزائی کی جائے گی جن کو کارکنوں کا اعتماد اور مینڈیٹ حاصل ہو۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ 2018 کے الیکشن کیلئے اے این پی کی تنظیمی تیاریاں ابھی سے بہتر طریقے سے آگے بڑھ رہی ہیں اور 2018 ہماری کامیابی کا سال ثابت ہوگا۔
دریں اثناء اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے صدر ملک غلام مصطفی نے کہا کہ 26 جنوری کو چارسدہ میں باچا خان اور ولی خان کی برسی کے اجتماع کیلئے تیاریاں جاری ہیں اور پشاور میں ہزاروں کارکن اس اجتماع میں شرکت کرنے چارسدہ جائیں گے۔

شیئر کریں