کراچی۔ ہفتہ 26 مارچ 2016،
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے کہا ہے کہ صرف قاتلوں کی بات ک جارہی ہے مقتولوں کی بات کون کرے گا؟کراچی کی بد امنی کی آگ میں ہزاروں شہری اپنی جانوں سے گئے اور لاکھوں انسان متاثر ہوئے ،جو سلسلہ چل پڑا ہے اس سے مجھے بادل نخواستہ شہر کے حالات بہتر ہوتے ہوئے نظر نہیں آتے، جن پندرہ ہزار شہداء کی بات کی جاتی ہے ان کے قاتلوں کو سزا کون دلائے گاتجربات کرنے کے بجائے شہر میں قیام امن کے لیے سپریم کورٹ کے کراچی بد امنی کیس کے فیصلے کے نکات پر عمل کیا جائے ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے ڈی سلوا چوک نارتھ نظام آباد میں ضلعی وسطی کے تحت ہونے والے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مذید کہا کہ آپریشن ضرب عضب سے دہشت گردی کے واقعات میں کافی بہتری آئی ہے چاہے آپریشن ضرب عضب ہویا کراچی آپریشن اسے آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جاری رکھا جائے ، ایسی کوئی مثال نہیں ملتی کہ جس سیاسی جماعت کے ستر سے زائد پارٹی لیڈران کو شہید کردیا جائے ان کی املاک پر بموں کی بارش کی جائے مگر وہ قوت پہلے سے زیادہ مضبوط اور توانا ہوجائے ،آج بھی پارٹی عہدوں کے لیے کارکنان کی قطاریں لگی ہوئی ہیں،انہوں نے مذیدکہا کہ شہر کے امن اور مسائل کے حل کے لیے بھر پور کردار ادا کرنا چاہتے ہیں،عجب تماشہ ہے کہ شہر کے ایک علاقے میں لوگ پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں اور دوسرے علاقے میں پانی کی بہتاب ہے کسی صورت تیسرے اور چوتھے درجے کے شہری کی حیثیت سے زندگی گزارنا قبول نہیں ہے شہر میں پینے کے پانی کی منصفانہ تقسیم کا مطالبہ کرتے ہیں انہوں نے مذید کہا کہ ورکرز پارٹی لیڈر شپ کی ہدایات پر فی الفور عمل کریں، ماضی سے کافی سبق سیکھ چکے ہیں ملک کی واحد سیاسی قوت ہیں جس کی پارٹی ممبر شپ کوائف کے ساتھ کمپیوٹر ائز ہوچکی ہے ،انہوں نے مذید کہا کہ شناخٹی کارڈ کا اجراء ریاست کی ذمہ داری ہے لوگوں کو طویل لائنوں میں لگاکر خوار کیا جارہا ہے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ہم پر شناختی کارڈ کے اجراء پر پابندی لگائی جارہی ہے ریاست کی غلطیوں کی سزا ہم پختونوں کو کیوں دی جارہی ہے نادرا ہم پختونون کے ساتھ اپنا رویہ درست کرے انہوں نے مذید کہا کہ اتحاد و اتفاق وقت کی اہم ترین ضرورت ہے ماضی میں بھی ہم نے اپنے اتفاق سے سازشوں کو ناکام بنایا ہے آج کے شاندار ورکرز کنونشن سے ہمارے مخالفین کی نیندیں حرام ہوچکی ہیں ہماری مصلحت کو ہماری کمزوری سمجھنے والوں کی آنکھیں کھل گئی ہوں گی،کنونش سے صوبائی جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سال بارہ مہینے عوام میں رہ کر ان کی خدمت کرتے ہیں اور ان کے مسائل کے حل کے لیے کوشاں ہیں شہر بھر میں گراس روٹ لیول پر ہماری تنظیم ڈھانچہ موجود ہے عوامی نیشنل پارٹی کمزور نہیں ہوئی بلکہ پہلے سے کہیں زیادہ مضبوط ہوگئی ہے ، شناختی کارڈ کے اجراء میں ہمارے ساتھ بد ترین تعصب برتا جارہا ہے ، نادرہ اپنے طرزعمل پر نظر ثانی کرے ،ہم انہیں خبردار کرتے ہیں کہ ہمیں سڑکوں پر آنے پر مجبور نہ کیا جائے ،ہمارے صوبائی صدر نے 2007 سے 2014 تک قوم کے سامنے جو حقائق رکھے آج اسی قوت کے اندر سے آوازیں اٹھ رہی ہیں اور انتہائی سنگین الزامات لگائے اور دہرائے جارہے ہیں،اس موقع پر ضلعی صدر نیاز محمد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھر پور کامیاب کنونشن پر پارٹی ذمہ داران و کارکنان کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں،آج کا کنونشن اغیار کی آنکھیں کھولنے کے لیے کافی ہے ،ورکرز کنونشن میں شریک خواتین ماؤں بہنوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، صوبائی سیکریٹری اطلاعات حمید اللہ خٹک نے کہا کہ سیاست ہمارے لیے عبادت ،خدمت اور قومی فریضے کا درجہ رکھتی ہے کراچی آپریشن کے بعد لوگ چھپتے پھر رہے ہیں اور دربدر کی ٹھوکریں کھارہے ہیں اورہمارے پارٹی ذمہ داران کھلے عام اپنی تنظیمی سرگرمیوں میں مصروف عمل ہیں قیام امن کے لیے قومی ایکشن پلان کے تمام نکات پر من و عن عمل کیا جائے اس موقع پر پختون اسٹوڈنٹس فیڈریشن کے کے مرکزی رہنماء اور پختون ایس ایف سندھ کے نگران اعلیٰ شیر محمد آفریدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ باچا خان بابا کی جدوجہد علم و ہنر سے آراستہ ہونے او ر قومی حقوق کا حصول تھا پختون اسٹوڈنٹس فیڈریشن،عوامی نیشنل پارٹی کا ہر اول دستہ ہے ہم توتعلیمی اداروں میں قومی خدمت کا فریضہ سر انجام دیتے رہیں گے صوبائی نائب صدر حاجی اورنگزیب بونیری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے اسلاف کی جدوجہد صرف کسی مخصوص قومی اکائی تک محدود نہ تھی عوامی نیشنل پارٹی کو عوام کے دلوں سے کوئی نہیں نکال سکتا مفاد پرستوں کے لیے پارٹی میں کوئی جگہ نہیں ہے ، اسلم لڈی نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی احترام انسانیت پر یقین رکھتی ہے ہم باچا خان بابا کے فلسفہ عدم تشدد یقین رکھتے ہیں۔