مورخہ : 31.5.2016 بروز منگل

پشتون تاریخ کو ارادتاً مسخ کیا جا رہا ہے۔ میاں افتخار حسین
آج پاکستانی معاشرے میں برداشت اور رواداری کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ حاجی محمد عدیل
بازار کلاں کی یاد میں منعقدہ تقریب سے عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماؤں کا خطاب

پشاور ( پریس ریلیز) زندہ قومیں اپنے شہیدوں کی یادیں نسلوں تک زندہ رکھتی ہیں کیونکہ ان شہداء نے اپنی مٹی اور قوم کی خاطر جانوں کا نذرانہ دیا ہوتا ہے۔ باچا خان بابا اور ولی خان بابا کے قافلے کے سپاہی اس دھرتی اور تاریخ کے امین کا کردار نبھاتے رہیں گے۔ ان خیالات کا اظہار عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے زیر اہتمام یوم شہدائے بازار کلاں کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر رہنما حاجی محمد عدیل، اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے صدر ملک غلام مصطفی اور جنرل سیکرٹری سرتاج خان بھی موجودتھے۔ اے این پی کے رہنماؤں نے یادگار پر پھول چڑھائے اور دُعا کی۔
میاں افتخار حسین نے کہا جنگ آزادی کے ان شہداء کو ہمیشہ کی طرح خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے آج ہم یہاں جمع ہوئے ہیں۔ ان شہداء کی قربانیوں کی وجہ سے آج ہم آزادی کی سانسیں لے رہے ہیں،لیکن بدقسمتی سے اس ملک میں دہشت گردی کی وجہ سے قربانیوں کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے اور عوامی نیشنل پارٹی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ جنگ آزادی کی جنگ ہو یا ملک کی بقاء اور سلامتی کا تحفظ ہو ، ہمیشہ اے این پی کے ورکروں نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔
اُنہوں نے کہا کہ ایسی صورت میں جب ہمارے ہیروز کو ولن کے روپ میں پیش کیا جا رہا ہے اور پختون دُشمنوں کو ہیروز کے طور پر ہماری ذہنوں پر مسلط کرنے کی سعی کی جا رہی ہے۔اس قوم کے ہر فرد کا فرض ہے کہ وہ تاریخ کو مسخ کرنے کی غرض سے کی جانے والی تمام کوششوں سے آگاہ رہیں۔ اے این پی کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے پختون سردار کالو خان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ مغل تاریخی طور پر پشتون دُشمن اور تاریخی خائن رہے ہیں۔مگر موجودہ حکمرانوں نے درسی کتابوں میں اُنہیں ہیروز کی حیثیت سے پیش کر کے خود تاریخی خیانت کا ارتکاب کیا ہے۔ اور اس پر مستزاد یہ کہ پختون ہیرو ملک کالو خان جس نے مغلوں کے خلاف 79 جنگیں لڑ کر مغلوں کی ناک میں دم کیے رکھا اور ساری جنگیں جیت کر یہ ثابت کر دیا تھا کہ وہی پختون قوم کے ہیرو ہیں ان کو انہی درسی کتابوں میں ایک ڈاکو کے روپ میں پیش کر کے حکمرانوں نے پختون دُشمنی کا ثبوت دیا ہے۔
میاں افتخار حسین نے مزید کہا کہ پختون قوم کو ان کی تاریخ کو اراتاً مسخ کرنے کی کوششوں سے آگاہ رہنا چاہیے اور باچا خان اور ولی خان کی تحریک کے سپاہی ان مذموم عزائم کا ڈٹ کر مقابلہ کرینگے۔
اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی محمد عدیل نے اپنے خطاب میں کہا کہ بازار کلاں کے واقع میں ان کے والد مرحوم عبدالجلیل خود شریک تھے جہاں فائرنگ میں 40 سے زیادہ جانیں چلی گئیں۔ حاجی عدیل نے کہا کہ اس خطے کی مشترکہ آزادی کیلئے مسلمان ، سکھ اور ہندو ؤں نے اپنے خون کا نذرانہ پیش کیا ہے لیکن آج معاشرہ فرقہ ورانہ عصیبت کا شکار ہو کر گروہوں میں تقسیم ہو گیا ہے۔ بازار کلاں شہداء کو عقیدت پیش کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اس معاشرے میں باہمی برداشت اور رواداری کو فروغ دیا جائے۔