مورخہ 11مارچ 2016ء بروز جمعہ

صوبے کے خزانے کی چابیاں بنی گالہ میں پڑی ہوئی ہیں جبکہ اختیارات جہانگیر ترین اور شاہ محمود قریشی کے پاس ہیں۔امیر حیدر خان ہوتی
عمران خان وزیر اعظم بننے کیلئے پنجاب کے مفادات کی سیاست کر رہے ہیں جبکہ نوازشریف کو صرف اپنی کرسی کی فکر ہے۔
پختونوں کے ہاتھوں میں قلم کی بجائے بندق تھمانے کی سازش کی جا رہی ہے۔ حکومت ناکام ہو گئی ہے۔
مستقبل میں پارٹی کے ٹکٹوں کی تقسیم کا اختیار قیادت کی بجائے کارکنوں کے ہاتھ میں ہو گا ۔ مردان میں شمولیتی اجتماع سے خطاب

پشاور ( پریس ریلیز) اے این پی صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کہ صوبائی حکومت کے پاس کوئی اختیا رنہیں ،خزانے کی چابیاں بنی گالہ میں پڑی ہیں ،بلدیاتی انتخابات میں پی ٹی آئی سے کچھ اضلا ع واپس لئے 2018میں پورا خیبرپختون خوا واپس لے کردم لیں گے ، پارٹی ٹکٹوں کا اختیار میرے پاس نہیں کارکن اورتنظیمیں آئندہ انتخابات میں ٹکٹیں تقسیم کریں گے وہ مردان کے صوبائی حلقہ پی کے 30کے علاقہ گجرات کے پلے گراؤنڈ میں ایک بڑے شمولیتی اجتماع سے خطاب کررہے تھے اس موقع پی ٹی آئی اور پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والے کونسلران سید بخت شاہ ، افتخار خان ،حکیم خان ،شادعلی او رمحمد علی نے سینکڑوں ساتھیوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا پارٹی کے صوبائی صدر نے انہیں پارٹی ٹوپیاں پہنائیں اور مبارک باددی پارٹی کے ضلعی صدر اور ضلع ناظم حمایت اللہ مایار، ضلعی جنرل سیکرٹری لطیف الرحمان اور دیگر نے بھی خطاب کیاامیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ اے این پی کے دور حکومت میں ہرطرف ترقی کا دوردورہ تھا تبدیلی والوں کے دور میں ترقی کا پہیہ رک گیاہے ان کے پاس کسی مرض کا علاج نہیں خزانے کی چابیاں بنی گالہ میں پڑی ہیں اختیارات شاہ محمود قریشی او رجہانگیر ترین کے پاس ہیں امیرحیدر خان ہوتی کاکہناتھاکہ موجودہ دور میں کوئی نیا منصوبہ شروع نہیں کیاگیا بلکہ ہمارے ترقیاتی منصوبوں پر اپنے نام کی تختیاں لگارہے ہیں انہوں نے کہاکہ ترقی چند کلو میٹرسڑک او رچند کھمبوں سے نہیں آتی ہمارے دور حکومت نے ریکارڈ توڑ منصوبے شروع کررکھے تھے موجودہ حکمران ان منصوبوں پر تختیاں لگاکر تھک جائیں گے لیکن ہمارے منصوبے ختم نہیں ہوں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ عمران خان وزیراعظم بننے کے لئے پنجاب کی سیاست کررہے ہیں جبکہ میاں نوازشریف اپنی کرسی بچانے میں لگے ہوئے ہیں دونوں کو پختون قوم کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ صوبائی حکومت عوام کے جان ومال کے تحفط میں ناکام ہے اپنی آئینی ذمہ داریاں نبھانے کی بجائے اساتذہ اورطلباء سے کہاجارہے کہ وہ دہشت گردوں کو خود مقابلہ کریں پختونوں کے ہاتھوں میں قلم کی بجائے بندوق دینے کی سازش ہورہی ہے اوراس کے خلاف اے این پی ڈٹ کر میدان میں کھڑی ہے اپنے دور حکومت میں دہشت گردوں کے سامنے ہمارے کارکنوں نے سینے تان کر مقابلہ کیا پولیس کے بہادر نوجوانوں نے جانوں کے نذرانے دیئے انہوں نے کہاکہ پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے حوالے سے واضح پالیسی ہے کوئی یہ سمجھے کہ ٹکٹ میرے جیب میں پڑے ہیں ٹکٹوں کا اختیار تنظموں اور کارکنوں کے پاس ہوگا انہوں نے کہاکہ سیاسی اختلاف کے باوجود انہوں نے اپنے دور میں عمران خان کے ہسپتال کے لئے کروڑوں روپے کی اراضی اور فنڈز دیئے تاکہ یہاں کے عوام ہسپتال کی سہولت سے مستفید ہوں لیکن آج عبدالولی خان یونیورسٹی کو اس لئے فنڈز جاری نہیں کئے جاتے کہ یہ منصوبے پر رہبر تحریک خان عبدالولی خان کے نام سے موسوم ہے انہوں نے کہاکہ مردان کا ڈسٹرکٹ ہسپتال ،چلڈرن ہسپتال اور باچاخان میڈیکل کالج کے تعمیراتی منصوبے جو گذشتہ سال مکمل ہونے تھے کو ادھورا رکھ اس کے فنڈز کو روک دیاگیا انہوں نے کہاکہ وہ انتقامی سیاست پر یقین نہیں رکتھے اقتدار میں آکر دوبارہ ترقیاتی عمل شروع کریں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ نے ورکروں کو ہدایت کی کہ وہ سوشل میڈیا مثبت مقاصد اور پارٹی کی ترویج و ترقی کے ساتھ ساتھ پختون قوم کی بیداری کے لئے استعمال کریں ۔