2016 پاکستان، ایران سعودی عرب تنازعے میں فریق بننے سے گریز کرے، اسفندیارولی خان

پاکستان، ایران سعودی عرب تنازعے میں فریق بننے سے گریز کرے، اسفندیارولی خان

پاکستان، ایران سعودی عرب تنازعے میں فریق بننے سے گریز کرے، اسفندیارولی خان

12485887_983482998380047_254530502923773737_o

مورخہ 5 جنوری 2016ء بروز منگل

پاکستان ، ایران سعودی عرب تنازعے میں فریق بننے سے گریز کرے ، اسفندیار ولی خان

پٹھان کوٹ اورمزارشریف حملے بھی باہمی تعاون ختم کرنیکی کارروائیاں مذموم کوششوں کا حصہ ہیں

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفندیار ولی خان نے ایران اورسعودی عرب کے درمیان موجودہ تناؤ کے خاتمے پرزوردیتے ہوئے کہاہے کہ دونوں ممالک باہمی تنازعات کو بات چیت کے ذریعے حل کریں،پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہدخان کی طرف سے جاری کردہ بیان میں پارٹی سربراہ اسفندیار ولی خان نے کہا کہ پاکستان دو برادر اسلامی ممالک کے درمیان فریق نہ بنے ،جب بھی پاکستان کسی اتحادمیں شامل ہوایافریق بناتوقوم کواس کا خمیازہ بھگتنا پڑا،انہوں نے کہا کہ افغانستان میں مداخلت کی وجہ سے پاکستان آج تک مشکلات کا شکارہے جبکہ افغانستان،ہندوستان اورپاکستان کے درمیان حکومتی سطح پرامن کے قیام کے لیے کوششوں کوسبوتاژکرنے والی قوتیں ایکبارپھرسازشوں میں مصروف ہیں،اسفند یار ولی خان نے کہا کہ بھارت میں پٹھان کوٹ اورمزارشریف افغانستان میں بھارتی سفارتخانے پرحملے بھی باہمی تعاون ختم کرنیکی کارروائیاں مذموم کوششوں کا حصہ ہیں، انہوں نے کہا کہ تینوں ممالک کی منتخب عوامی حکومتیں جرات مندی سے کام لے کربات چیت کے ذریعے ایسا لائحہ عمل بنائیں تاکہ امن کی طرف کی گئی پیشقدمی کو روکا نہ جا سکے، اسفندیار ولی خان نے کہاکہ تینوں ممالک کے سربراہان کو چاہیے کہ امن کے دشمنوں کے مذموم عزائم کو ناکام بنانے کے لیے مذاکرات کا عمل جاری رکھیں ۔

شیئر کریں