مورخہ : 18.4.2016 بروز پیر

پانامہ لیکس بحران ، اے این پی کی مذاکراتی کمیٹی سے تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) کے وفود کی ملاقاتیں۔
اے این پی نے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے زیرنگرانی تحقیقاتی کمیٹی کے قیام اور جمہوریت کو ڈی رول ہونے سے بچانے کی ضرورت پر زور دیا۔
پاکستان پیپلز پارٹی کا اہم وفد بھی آج اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کی قیادت میں اے این پی کی مذاکراتی کمیٹی سے ملاقات کرے گا۔

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی نے ایک بار پھر اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ پانامہ لیکس اور اس سے پیدا شدہ صورتحال سے نمٹنے کیلئے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی زیر نگرانی ایسا قابل قبول تحقیقاتی کمیشن تشکیل دیا جائے جس کو سب سیاسی جماعتوں کا اعتماد حاصل ہو اور ایسے اقدام یا بحران سے بچنے کی یقینی کوشش کی جائے جس سے جمہوری نظام کے ڈی رول ہونے کا خدشہ ہو۔
اے این پی سیکرٹریٹ سے جاریکردہ بیان کے مطابق تحریک انصاف کے ایک اعلیٰ سطحی وفد نے شاہ محمود قریشی کی قیادت میں جبکہ مسلم لیگ (ن) کے وفد نے وفاقی وزیر عبدالقادر بلوچ کی قیادت میں پیر کی شام پارلیمنٹ لاجز میں اے این پی کی مذاکراتی کمیٹی کے ارکان حاجی غلام احمد بلور ، میاں افتخار حسین ، افراسیاب خٹک ، زاہد خان اور بشریٰ گوہر سے تفصیلی ملاقاتیں کیں۔ دونوں وفود نے ملک کو درپیش حالیہ بحران سے متعلق ایشو پر اے این پی کی کمیٹی کے ساتھ تبادلہ خیال کیا جبکہ اے این پی نے دونوں وفود کو اپنے اُصولی موقف سے آگاہ کیا۔
اے این پی کی کمیٹی نے دونوں وفود پر واضح کیا کہ پارٹی کسی بھی قیمت پر ایسے کسی اقدام یا کوشش کی حمایت نہیں کرے گی جس سے جمہوریت کے ڈی رول ہونے کا خدشہ ہو۔ پارٹی نے موقف اپنایا کہ چیف جسٹس کی سربراہی میں ایک بااختیار کمیشن بنایا جائے تاکہ وہ پانامہ لیکس کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کو یقینی بنائیں اور اس عمل کو تمام قابل ذکر سیاسی قوتوں کی حمایت حاصل ہو۔
دونوں وفود کو بتایا گیا کہ جب تک وزیر اعظم اور دیگر کے بارے میں تحقیقات شروع اور مکمل نہیں کی جاتیں تب تک وزیر اعظم کے استعفے سمیت کسی مطالبے یا کوشش سے گریز کیا جائے جس سے بحران کی شدت میں اضافے کا خدشہ ہو۔
قبل ازیں تحریک انصاف کے وفد نے اے این پی کو آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی جو کہ قبول کی گئی۔ اس سلسلے میں آج منگل کے روز پاکستان پیپلز پارٹی کا ایک اہم وفد بھی اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کی قیادت میں اے این پی کی مجاز کمیٹی کیساتھ ملاقات کرے گا۔