مورخہ : 2.1.2016 بروز ہفتہ

وزیر اعظم کو کاریڈور کے مغربی روٹ کے حوالے سے اپنے وعدے کی پاسداری کرنا ہو گی ’ میاں افتخار حسین ‘
* مغربی روٹ کی تعمیر سے ملک میں معاشی ترقی کی راہ ہموارہوگی ، روٹ سے ملحق دیہی اور پسماندہ علاقوں کی پسماندگی کے خاتمے میں بھی کافی مدد ملے گی ۔
* مغربی روٹ کیلئے اے این پی نے تمام مذہبی اور سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنے کیلئے عملی اقدامات اُٹھائے ہیں۔

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ پاک چائنہ اقتصادی راہداری کا مغربی روٹ فاٹا ، خیبر پختونخوا سمیت بلوچستان اور پنجاب کے پسماندہ علاقوں کی ترقی و خوشحالی کا ضامن ہے۔
باچا خان مرکز پشاور میں خدائی خدمتگار تحریک کے بانی باچا خان بابا اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان بابا کی برسی کے انعقاد کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو 28 مئی کو اپنے کیے گئے وعدے کی تکمیل کو یقینی بنانے کیلئے اے این پی کے تحفظات کو ختم کرنے کیلئے سنجیدگی سے اقدامات اُٹھانے ہوں گے۔
اُنہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی نے پاک چائنہ اقتصادی راہداری کے مغربی روٹ کیلئے نہ صرف آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کیا بلکہ تمام مذہبی و سیاسی جماعتوں کو پاک چائنہ اقتصادی راہداری کے مغربی روٹ کے کام کو یقینی بنانے کیلئے ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا بھی کیا ہے۔ میاں افتخار حسین نے اپنے خطاب میں اس توقع کا اظہار بھی کیا کہ اس ترقیاتی منصوبے کے مغربی روٹ کی تعمیر سے ملک میں معاشی ترقی کی راہ ہموار ہونے کے ساتھ ساتھ روٹ سے ملحق دیہی اور پسماندہ علاقوں کی پسماندگی کے خاتمے میں بھی کافی مدد ملے گی اور پاکستان کے زیادہ تر متاثرہ علاقے اس کے ثمرات سے مستفید ہوں گے اور ان علاقوں کے غریب عوام کو روزگا ر کے بہتر مواقعمیسر ہو نگے ۔ اُنہوں نے کہا کہ پاک چائنہ اکنامک کوریڈور کے مغربی روٹ کے حوالے سے مرکزی حکومت کو مختلف مکتبہ فکر کے لوگوں کے تحفظات کو بروقت ختم کرنے کیلئے سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے وزیر اعظم کو اس معاملے میں خصوصی دلچسپی کا اظہار کرنا ہوگا۔