مورخہ : 16.2.2016 بروز منگل

وزیراعلیٰ اور ان کی ٹیم پاک چائنا منصوبے میں صوبے کا مقدمہ پیش کرنے میں ناکام ہے۔حاجی عدیل
منصوبے میں صوبے کے ساتھ دوغلی پالیسی برداشت نہیں کی جائے گی۔

پشاور(پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر مرکزی رہنما اور سابق صوبائی وزیر خزانہ حاجی عدیل نے کہا ہے کہ پاک چائنا راہداری منصوبے کے حوالے سے صوبائی وزیراعلیٰ خیبر پختون خوا اور ان کی ٹیم اپنے صوبے کے مقدمہ کو صحیح طریقے اور سیاسی انداز میں پیش کرنے میں ناکام دکھائی دے رہی ہے، وزیراعلیٰ نے گزشتہ روز پلاننگ کمیشن کے وزیر وفاقی وزیر احسن اقبال کے ساتھ ملاقات میں بھی ان کے ہاں میں ہاں ملائی اور اپنے موقف میں ضرورت سے زیادہ لچک کا مظاہرہ کیاہے ، اے،این،پی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ بیان میں حاجی عدیل نے کہا کہ منصوبے کے حوالے سے ہونے والے ہر اجلاس میں وزیر اعلیٰ اندر رضامندی اور باہر پھر اختلافات کا اظہار کرتے ہیں جس سے وزیراعلیٰ کی دوغلی پالیسی کا بخوبی اندازہ لگایا جاسکتاہے،انہوں نے کہا ملک کی تقدیر بدلنے والے منصوبے میں خیبر پختون خوا کے ساتھ وہی پرانا سلوک کیا جارہاہے،جو ہمیشہ سے ہوتارہا ہے، انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ جب بھی مرکز میں مسلم لیگ کی حکومت آتی ہے چھوٹے صوبوں کے ساتھ امتیازی سلوک پر اتر آتی ہے، انہوں نے کہا کہ وفاق کی جانب سے مغربی روٹ پر پہلے کام شروع کرنے کا اعلان اچھی بات ہے،تاہم جس نقشے پر اصرار کیاجارہاہے، اور وزیراعلیٰ نے بھی اس پر اپنی انکھیں اس لیے بند کی ہوئی ہیں کہ وہ روٹ حویلیاں سے میانوالی جائے گا جو پنجاب کا حصہ اور عمران خان کا حلقہ انتخاب ہے،جس سے ہری پور ،ڈی آئی خان،کوہاٹ اور بنوں کے عوام محرومی کا شکار ہوجائیں گے، انہوں نے کہا کہ ابتدائی نقشے میں مغربی روٹ کے ساتھ ریلوے لائن کی تجویز بھی شامل تھی مگر اب اس کوئی ذکر نہیں کررہاہے۔انہوں نے کہا کہ جب تک مغربی روٹ پر دیگر مراعات کے ساتھ کام شروع نہیں کیا جاتا اس وقت تک وفاقی حکومت کے وعدوں اور اعلانات پر اعتبار نہیں کیاجانا چاہئے۔