مورخہ : 16.5.2016 بروز پیر

ملگری اُستاذان خیبر پختونخوا نے تعلیم بچاؤ مہم کا اعلان کر دیا ہے۔
مورخہ 19 اور 20 مئی کو پریس کلب کے سامنے دھرنا جبکہ 25 مئی کو صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاج کیا جائیگا ۔
صوبائی حکومت اُستاذ دُشمن اور تعلیم دُشمن پالیسیوں سے گریز کرے۔ ملگری اُستاذان خیبر پختونخوا

پشاور ( پریس ریلیز) ملگری اُستاذان نے صوبائی حکومت کی تعلیم دشمن پالیسیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے تعلیم بچاؤ مہم چلانے کا اعلان کیا ہے ،اس بات کا اعلان ملگری استاذان کے اجلاس میں کیا گیا جو زیر صدارت صوبائی صدر ملگری اُستاذان امجد علی ترکئی باچا خان مرکز میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں صوبہ بھر سے عہدیداروں نے شرکت کی،صوبائی جنرل سیکرٹری وارث خان نے سٹیج سیکرٹری کے فرائض انجام دیئے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے حکومت وقت کی اُستاد دُشمن پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بنایا اور خدشہ ظاہر کیا گیا کہ موجودہ حکومت محکمہ تعلیم میں ایسی تبدیلیاں لانا چاہتی ہے تاکہ قوم کی تعلیم و تربیت اس انداز سے ہو کہ پختون قوم ترقی نہ کر سکے۔ اس لیے محکمہ تعلیم میں مختلف حیلے بہانے سے کبھی ، ایٹا ٹیسٹ اور کبھی این ٹی ایس کے نام پر کرپشن کی راہیں ہموار کی جا رہی ہیں نیز اساتذہ کو مختلف طریقوں سے پریشان کیا جا رہاہے۔ لیکن ملگری اُستاذان حکومت وقت کا یہ خواب پورا نہیں ہونے دینگے۔
اجلاس میں کہا گیا کہ سیکرٹری ایجوکیشن خوشامدانہ رویہ یورپ کے ایجنڈے تک محدود رکھیں ورنہ وہ دن دور نہیں جب سیکرٹری تعلیم بوریا بستر چھوڑ کر اٹک کے پار ہونگے۔ اجلاس میں مختلف ضلعوں کے صدور اور سیکرٹریز نے شرکت کی اور فیصلہ کیا کہ 19 اور 20 مئی کو پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا جائیگا جبکہ 25 مئی کو صوبائی اسمبلی کے سامنے پرزور احتجاج کیا جائیگا جو کہ آل کوآرڈینیشن کونسل کے زیر اہتمام ہوگا۔
تمام اساتذہ کرام اس احتجاج میں بھرپور شرکت کریں گے اور یورپ زدہ افسران کو دکھائیں گے کہ اس ملک کی حفاظت اور تعلیم بچاؤ مہم کو کیسے چلایا جاتا ہے۔مقررین نے چارٹر آف ڈیماند جس میں اساتذہ انتخابات ، ٹیچر سن کوٹہ ، چھٹیوں میں کنوینس الاؤنس کی کٹوتی ، چھٹی اتفاقیہ میں کمی ، ڈیسیز کوٹہ اور دیگر مسائل میں تاخیر پر شدید مذمت کی اور حکومت وقت کو اُستاد دُشمن قرار دیا۔