مورخہ : 17اپریل2016ء بروز اتوار

مردم شماری کے بغیر صوبوں کے مفادات کا تحفظ ممکن نہیں۔ ستارہ ایاز
مرکز اور پنجاب کا رویہ صوبوں کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنے کے مترادف ہے۔
مردم شماری میں مسلسل تاخیر نے بہت سے شکوک و شبہات کو جنم دے رکھا ہے

پشاور( پریس ریلیز ) عوامی نیشنل پارٹی کی رہنما سینیٹر ستارہ ایاز نے مردم شماری میں بلا وجہ تاخیر پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ طویل تعطل کے باوجود مردم شماری میں مسلسل تاخیر نے بہت سے شکوک و شبہات کو جنم دے رکھا ہے اور اس رویے کے باعث چھوٹے صوبوں کے احساس محرومی میں مزید اضافے کا راستہ ہموار ہونے لگا ہے۔
اے این پی سیکرٹریٹ سے جاریکردہ بیان میں اُنہوں نے کہا کہ مردم شماری کرانا وقت کا تقاضا ہے اور یہ وفاقی حکومت کی بنیادی ذمہ داریوں میں شامل ہے جبکہ اس کے بغیر صوبوں کے اقتصادی اور سیاسی مفادات کا تحفظ ممکن نہیں ہوتا۔ اُنہوں نے کہا کہ اگر ملک میں ایک تسلسل کے ساتھ عام انتخابات کا انعقاد کرایا جا سکتا ہے تو مردم شماری کرانا کیوں ناممکن ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکز اور پنجاب ایک منصوبے کے تحت مردم شماری کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں اور وفاق کی جانب سے یہ رویہ دیگر صوبوں کو منفی پیغام دے رہا ہے ۔
ستارہ ایاز نے مزید کہا کہ اس قسم کے رویے صوبوں کے مفادات اور حقوق پر ڈاکہ ڈالنے کے مترادف ہیں اور ان آئینی ترامیم اور قومی فیصلوں کو سبوتاژ کرنے کی ایک کوشش ہے۔ جو گزشتہ پارلیمانی ادوار میں کیے گئے ہیں اور جن سے صوبوں کے خدشات میں کافی حد تک کمی واقع ہوگئی تھی۔
انہوں نے کہا کہ مردم شماری کی ضرورت اب پہلے سے زیادہ ہو چکی ہے تاہم مرکزی حکومت اس کو سنجیدگی سے نہیں لے رہی ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملک بھر میں مردم شماری کیلئے ٹھوس اور سنجیدہ اقدامات کئے جائیں۔