مورخہ : 19.4.2016 بروز منگل

مردان دھماکے سے ثابت ہوا ہے کہ دہشتگردوں کے نیٹ ورک اب بھی موجود ہیں۔ امیر حیدر خان ہوتی
دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں ۔ وہ انسان کہلانے کے بھی قابل نہیں ہیں۔
جشن پختونخوا کی تقریبات منسوخ کرتے ہیں۔ کارکن شہداء اور زخمیوں کیلئے دُعائیہ اجتماعات منعقد کریں۔ مردان دھماکے پر شدید رد عمل

پشاور( پریس ریلیز ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے مردان کے ایکسائز دفتر پر خودکش حملے کو بزدلانہ کاروائی قراردیتے ہوئے اس کی شدید مذمت کی اور دھماکے میں شہید ہونے والوں کی بلندی درجات اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعامانگی ہے، اور اے این پی کے زیراہتمام مختلف اضلاع میں صوبے کے نام کی خوشی منعقدہ جشن تقریبات کو فوری طورپر منسوخ کرنے کا اعلان کیاہے۔
اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ ایک بیان میں امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ دہشت گردسرے سے انسان کہلانے کے لائق نہیں انہوں نے دھماکے بعد صوبے کے نام کی خوشی میں ہونے والی تمام تقریبات کو فوری طورپر منسوخ کرتے ہوئے پارٹی کارکنوں کو ہدایت جاری کی ہیں کہ وہ ہسپتالوں میں زیر علاج حملے کے زخمیوں کو خون کے عطیات دیں ،امیرحیدرخان ہوتی نے دھماکے میں زخمی ہونے والے مردان پریس کلب کے سابق نائب صدر اور سینئر صحافی یوسف خان کی خیریت دریافت کی اورر پریس کلب مردان کے صدر حاجی محمد شفیع اور جنرل سیکرٹری ایم بشیرعادل کو فون کرکے ان سے بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا اے این پی کے صوبائی صدر نے پارٹی کارکنوں کو ہدایت کی کہ دھماکے میں جان بحق اور زخمیوں کی صحت یابی کیلئے ختم القرآن اور دعائیہ تقریبات منعقد کی جائیں۔ امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ دہشت گردوں کا کوئی مذہب نہیں وہ سرے سے انسان کہنے لائق نہیں ، بے گناہ شہریوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ۔اُنہوں نے کہاکہ دہشت گردوں نے بے گناہ شہریوں کو نشانہ بناکر ظلم وبربریت کی تاریخ رقم کی انہوں نے کہاکہ سانحے کے بعد ہماری آنکھیں کھلنی چاہئے کہ دہشت گرد کا نیٹ ورک اب بھی موجود ہے انہوں نے سانحے میں شہید ہونے والے افراد کی بلندی درجات اورتمام زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے بھرپوریکجہتی کا اظہا رکیاہے ۔