مورخہ 6 اپریل 2016ء بروز بدھ

محکمہ صحت کو تباہ کرنے کی کسی بھی صورت اجازت نہیں دی جائیگی، ہارون بشیر بلور
ایڈ ہاک ازم کی بنیاد پر محکمہ چلانے اور اپنوں کو نوازنے کے انتہائی منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں
اے این پی ڈاکٹربرادری کے ساتھ کھڑی رہے گی تاکہ محکمہ صحت کو تباہی سے بچایا جائے

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات ہارون بشیر بلورنے صوبائی حکومت کی مجوزہ ہیلتھ پالیسی کو عوام دُشمن قرار دیتے ہوئے کہا ہے حکومت کی ناقص اور یکطرفہ ہیلتھ پالیسی کے باعث صوبے میں ہسپتالوں کی حالت دگرگوں ہے اور عوام بنیادی طبی سہولیات سے محروم ہو کر رہ گئے ہیں ۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے صحت ، تعلیم اور بعض دیگر سرکاری محکموں کی ناقص اور عوام دُشمن حکومتی پالیسیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے پی ٹی آئی کی حکومت کی تبدیلی کے دعوؤں کو غلط قراردیا اور واضح کیا ہے کہ محکمہ صحت کو تباہ ہونے کی کسی بھی صورت اجازت نہیں دی جائیگی ،ہارون بلورنے کہا کہ تین سال گزرنے کے باوجود صحت اور تعلیم کے شعبوں میں کوئی مثبت تبدیلی نہیں آئی بلکہ صورتحال پہلے کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ خراب ہو گئی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کو ایڈ ہاک ازم کی بنیاد پر چلانے اور اس کی آڑ میں اپنوں کو نوازنے کے انتہائی منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ اس رویے کے باعث نہ صرف یہ کہ صوبے کے عوام صحت کی سہولیات سے محروم رکھے جا رہے ہیں بلکہ ڈاکٹروں میں بدترین بے چینی بھی پھیل گئی ہے۔ اُنہوں نے کہاکہ کسی بھی قیمت پر محکمہ صحت کو نجکاری کے یکطرفہ عمل کی نذر نہیں ہونے دیا جائیگا اور اے این پی اس ایشو پر ڈاکٹروں کے ساتھ کھڑی رہے گی تاکہ محکمہ صحت کو تباہی سے بچایا جائے اور حکومت کے عوام دُشمن پالیسیوں کا راستہ روکا جاسکے۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی بنیادی انسانی حقوق کی پاسداری کیلئے ہر طبقے کی جدوجہد کی حمایت کرتی آئی ہے اور اس ایشو پر بھی پارٹی اپنا مثبت کردار ادا کرے گی۔