مورخہ : 11.2.2016 بروز جمعرات

عمران خان اور ان کی حکومت نے صوبے کو تجربہ گاہ میں تبدیل کر دیا ہے۔ ہارون بلور
حکومت تبدیلی تو درکنار پہلے ہی سے موجود حکومتی ڈھانچے کو تباہ کرنے پر تلی ہوئی ہے۔
حکومت رویے سے لگ یہ رہا ہے جیسے حکمران صوبے کے عوام سے انتقام لینے کی پالیسی پر گامزن ہیں۔

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ترجمان ہارون بشیر بلور نے کہا ہے کہ عمران خان اور ان کی حکومت دوغلے پن کا شکار ہیں اور اُنہوں نے جنگ زدہ صوبے کو تجربہ گاہ میں تبدیل کر دیا ہے۔
اپنے ایک بیان میں اُنہوں نے کہا کہ عمران خان نام و نہاد اور یکطرفہ اصلاحات کے نام پر صحت اور تعلیم جیسے اہم شعبوں کو برباد کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔ حکومت نے تعلیمی اداروں کو چھاؤنیوں میں جبکہ ہسپتالوں کو قبرستانوں میں تبدیلی کر کے رکھ دیا ہے اور لگ یہ رہا ہے جیسے وہ صوبے کے جنگ زدہ عوام سے انتقام لینے کی پالیسی پر عمل پیرا ہو۔
اُنہوں نے مزید کہا کہ اصلاحات اور لازمی سروس ایکٹ کے ذریعے ڈاکٹروں اور عملے کے دیگر لوگوں کو ہراساں کرنے کی یکطرفہ حکومتی کوششیں قابل تشویش ہیں اور حکومت کی ہٹ دھرمی کے باعث ملازمین احتجاج کے بعد اب مزاحمت پر اُتر آئے ہیں جس کا تمام تر نقصان صوبے کے عوام کو اُٹھانا پڑ رہا ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ تبدیلی تو درکنار حکومت پہلے ہی سے موجود حکومتی ڈھانچے کو مفلوج اور ناکارہ بنانے پر تلی ہوئی ہے۔ اگر صورتحال میں بہتری نہیں لائی گئی تو اس کے انتہائی منفی نتائج برآمد ہوں گے۔
اُنہوں نے صوبے بالخصوص پشاور میں امن و امان کی بگڑتی صورتحال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت عوام ’ تاجروں اور سرکاری ملازمین کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہو گئی ہے اور یہی وجہ ہے کہ حکمرانوں پر سے عوام کا اعتماد اُٹھ چکا ہے۔