مورخہ : 29.2.2016 بروز پیر

عمران خان ابتداء میں جس کی تعریف کرتے ہیں بعد میں اُس پر تنقید کے تیر برساتے ہیں۔حاجی محمد عدیل
امیر حیدر خان ہوتی نے شوکت خانم کیلئے نہ صرف 50 کنال اراضی دی بلکہ پانچ کروڑ روپے بھی دئیے۔
بنیادی طور پر یہ بات عمران خان کی فطرت میں شامل ہے کہ وہ غیر مستقل مزاج اور غیر سنجیدہ شخص ہیں۔

پشاور(پ،ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما اور سابق صوبائی وزیرخزانہ حاجی محمدعدیل نے کہا ہے کہ یہ بات عمران خان کی فطرت میں شامل ہے کہ جس نے بھی ان سے نیکی کی ہے سب سے زیادہ تنقید کا نشانہ بھی اسی کو بناتے ہیں، آج تو وہ آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی تعریف اس لیے کررہے ہیں کہ انہوں نے کراچی میں شوکت خانم ہسپتال کے لیے زمین الاٹ کردی،مگر ہوسکتا ہے کہ ریٹائزمنٹ کے بعد عمران خان اپنی آج کی تعریف بھول جائے اور پھر جنرل راحیل شریف پر بھی تنقید شروع کردیں،اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ بیان میں حاجی عدیل نے کہا کہ جس وزیراعظم میاں نواز شریف نے اپنے گزشتہ دور حکومت میں لاہور میں شوکت خانم ہسپتال میموریل ہسپتال کے لیے نہ صرف مفت زمین دی تھی بلکہ مشینری پر عائد ٹیکسز معاف اور مالی امداد بھی کی تھی یہاں تک کہ ہسپتال کا افتتاح بھی میاں نوازشریف ہی نے کیا تھا،مگر آج وہی نوازشریف عمران خان کی آنکھوں کا کانٹا اور تنقید کا نشانہ بنے ہوئے ہیں،انہوں نے کہا کہ ہماری سابق صوبائی حکومت اور وزیراعلیٰ امیرحیدر خان ہوتی نے پشاور میں شوکت خانم میموریل ہسپتال کے لیے نہ صرف پچاس کنال قیمتی اراضی مفت دی بلکہ افتتاح کے موقع پر پانچ کروڑ روپے بھی دیے،اس وقت عمران خان اے این پی اور وزیراعلیٰ کی تعریف میں زمین اور آسمان کے قلابے ملاتے رہے ،مگر بعد میں اور آج اپنی وہ پرانی تعریف بھول گئے ہیں اور اسی زبان سے اے این پی کے قائدین اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی پر تنقید کے تیر برساتے ہیں،جس سے عمران خان کی غیر مستقل مزاجی اور غیرسنجیدگی کا اندازہ بخوبی لگایا جاسکتاہے۔