2016 صوبے کا گیس کوٹہ پنجاب منتقل کرنے کی کسی طور اجازت نہیں دی جائے گی ، سردار حسین بابک

صوبے کا گیس کوٹہ پنجاب منتقل کرنے کی کسی طور اجازت نہیں دی جائے گی ، سردار حسین بابک

صوبے کا گیس کوٹہ پنجاب منتقل کرنے کی کسی طور اجازت نہیں دی جائے گی ، سردار حسین بابک

مورخہ 17جنوری 2016ء بروز اتوار

صوبے کا گیس کوٹہ پنجاب منتقل کرنے کی کسی طور اجازت نہیں دی جائے گی ، سردار حسین بابک
وزارت پٹرولیم کی جانب سے گیس کی تقسیم کا فارمولہ تبدیل کرنے سے صوبے کی گیس کا 70فیصد کوٹہ پنجاب منتقل کر دیا جائے گا
مرکز ی حکومت خیبر پختونخوا سے مینڈیٹ نہ ملنے پر صوبے کے عوام کو اس کی سزا دے رہی ہے ،
صوبائی حکومت وسائل پنجاب منتقل کرنے کی پالیسی کا نوٹس لے ، اے این پی ہر فورم پر اس کے خلاف مزاحمت کرے گی

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے وفاق کی جانب سے خیبر پختونخوا کے گیس کوٹے میں کمی کے فیصلے کو یکسر مسترد کرتے ہوئے اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کا اعلان کیا ہے ، اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے اس امر پر انتہائی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اے این پی ایک عرصہ سے خیبر پختونخوا حکومت کی توجہ اس جانب دلا رہی ہے کہ مرکزی حکومت صوبے کے حقوق غصب کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے لیکن صوبائی حکومت اس کا نوٹس نہیں لے رہی انہوں نے کہا کہ اب وزارت پٹرولیم کی جانب سے گیس کی تقسیم کا فارمولہ تبدیل کیا جارہا ہے جس کے بعد صوبے کی گیس کا 70فیصد کوٹہ پنجاب منتقل کر دیا جائے گا جو خیبر پختونخوا کے عوام کے ساتھ زیادتی ہے انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو خیبرپختونخوا سے مینڈیٹ نہیں ملا تو انہوں نے پنجاب کو ہی پاکستان تصور کر لیا ہے اور اس مینڈیٹ نہ ملنے کی سزا صوبے کے عوام کو ان کے حقوق چھین کر دی جا رہی ہے، سردار حسین بابک نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد گیس پر متعلقہ صوبے کا حق بنتا ہے تاہم مرکزی حکومت نے اب ذاتی مفادات کی خاطر آئین کی دھجیاں بھی اڑانا شروع کر دی ہیں ، انہوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وفاق کی جانب سے صوبے کے حقوق چھیننے کی پالیسی کے خلاف آواز اٹھائے ورنہ صوبے کے وسائل لوٹنے والے خیبر پختونخوا کے عوام کو ان کے حقوق سے محروم کر دیں گے ، انہوں نے کہا کہ مرکز کی جانب سے گیس کوٹہ پنجاب منتقل کرنے سے خیبر پختونخوا میں ایک طرف سی این جی سٹیشنز بند ہو جائیں گے جبکہ دوسری جانب گھریلو صارفین کیلئے بھی گیس کی فراہمی بند کر دی جائیگی اسی طرح لاکھوں افراد کے کاروبار تباہ ہونے سے ان کے گھروں کے چولہے بھی ٹھنڈے پڑ جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی اس حربے کے خلاف ہر فورم پر آواز اٹھائے گی اور صوبے کے وسائل پر زبردستی قبضے کی کوشش کے خلاف مزاحمت کرے گی ۔

شیئر کریں