مورخہ 13مارچ 2016ء بروز اتوار
صوبے میں بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات سے سراسیمگی کی صورتحال ہے، ہارون بشیر بلور
حاجی حلیم جان کے قتل کے بعد سے اب تک تاجر برادری مسلسل احتجاج پر ہے تاہم قاتل آج تک گرفتار نہیں ہوسکے
مکروہ دھندے میں ملوث عناصر کو گرفتار کر کے عوام کے جان و مال کی حفاظت یقینی بنائی جائے

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات ہارون بشیر بلور نے پشاور سمیت خیبر پختونوا میں بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کے بڑھتے واقعات پر انتہائی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے حکومت کی نااہلی قرار دیا ہے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ صوبے میں بھتہ خوروں کی دھمکیوں اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات سے سراسیمگی کی صورتحال ہے اور تاجر و کاروباری طبقہ ان دھمکیوں کے باعث سخت پریشان ہے،جبکہ مقتول حاجی حلیم جان کے قتل کے بعد سے اب تک تاجر برادری مسلسل احتجاج پر ہے لیکن صوبائی حکومت کی کارکردگی صفر ہے اور وہ اس سمیت کسی بھی قاتل کو گرفتار کرنے میں تاحال ناکام ہے ،انہوں نے کہا کہ عوام عدم تحفظ کا شکار ہیں جس کی وجہ صوبائی حکومت کی جانب سے دکھائی جانے والی سرد مہری ہے ، انہوں نے کہا کہ تبدیلی کے دعویدار اپناکوئی وعدہ بھی پورا نہ کر سکے اورتین سال کے عرصہ میں عوام مزید عدم تحفظ کا شکار ہو چکے ہیں ، انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ عوام کے جان و مال کی حفاظت کے دعویدار اور نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کے وعدے ہوا ہو چکے ہیں اور اب پی ٹی آئی کی حکومت روزانہ کی بنیاد پر عوام سے روزگار چھیننے کے درپے ہے ،ہارون بلور نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ بھتہ خوروں کو نکیل ڈالی جائے اور اس مکروہ دھندے میں ملوث عناصر کو گرفتار کر کے عوام کے جان و مال کی حفاظت یقینی بنائی جائے ، انہوں نے کہا کہ بھتہ خوری کی وارداتوں میں اضافے کی ایک وجہ شاید یہ بھی ہے کہ اب خیبر پختونخوا پولیس بھی بھتہ خوروں کے سامنے بے بس نظر آنے لگی ہے ،انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت عوامی مینڈیٹ کا احترام کرتے ہوئے عوام کی جان و مال کا تحفظ یقینی بنائے۔