9.3.2016 anp picمورخہ 9مارچ 2016ء بروز بدھ

طالبان کے دوست وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ میں ایک کمرہ بھی مختص کر دیں تا کہ پی ٹی آئی کا مطالبہ بھی پورا ہو جائے
۔ 30سال سے جاری جنگ سے کسی کو فائدہ نہیں ملا لہذا اب اسے بند کر دینا چاہئے پختون دشمن فائدہ اٹھا رہے ہیں
ایک شخص کے مرنے پر پورے پاکستان میں ہنگامہ کھڑا کر نے والے شبقدر میں 20افراد کی شہادت پر کیوں خاموش ہیں
پشاور (پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر اور ایم این اے حاجی غلام احمد بلور نے شبقدر دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پختونوں کا خون بہا روکنے کیلئے اپنے دوستوں سے مذاکرات کرے جو ہمارا راستہ روک کر تحریک انصاف کو اقتدار میں لائے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک سٹی دسترکٹ کے صدر ملک غلام مصطفی سمیت دیگر رہنما بھی اس موقع پر موجود تھے ،اس موقع پر شبقدر دھماکے کے شہداء کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی ،حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد نہ ہونا دہشت گردی میں اضافے کی بڑی وجہ ہے اور مرکزی حکومت بھی اس میں برابر کی شریک ہے ، انہوں نے کہا طالبان کے دوست وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ میں ایک کمرہ ان کیلئے مختص کر دیں تا کہ ان کیلئے جگہ فراہم کرنے کا پی ٹی آئی کا مطالبہ بھی پورا ہو جائے،انہوں نے کہا کہ پاکستان ، افغانستان ،ایران ،بھارت اور بنگلہ دیش مل بیٹھ کر لائحہ عمل طے کریں تو ملک سے دہشت گردی سمیت غربت ، مہنگائی اور بے روزگاری کا خاتمہ بھی ہو جائے گا،انہوں نے اس بات پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا کہ ممتاز کا قادری کا بدلہ لینے والوں نے بدلہ پختونوں سے لیا جبکہ مرنے والا ، مارنے والا فیصلہ سنانے والا اور پھانسی دینے والا سب ہی پنجاب سے تھے لیکن بدلہ پختونوں کے بچوں ، عورتوں اور مردوں سے لیا گیا انہوں نے کہا کہ اسلام کی کونسی شکل ہے جس کیلئے 40سال سے پختونوں کا خون بہایا جا رہا ہے،انہوں نے کہا کہ جہاد کشمیر میں شہید ہونے والے سبھی پختون تھے ،کوئی پنجابی ، بلوچی اور سندھی اس میں شامل نہیں تھا،جبکہ بعد میں جہاد افغانستان کا نام لے کر پختونوں کو قتل کرایا گیا ،انہوں نے بعض اخبارات میں شائع ہونے والے بیانات پر حیرت کا اظہار کیا جن میں کہا گیا کہ پنجاب پُر امن شہر ہے اور یہاں رینجرز تعینات کرنے کی ضرورت نہیں ، حاجی بلور نے کہا کہ پنجاب والے خوش قسمت ہیں اور پختون بدقسمتی سے صرف مرنے کیلئے رہ گئے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پختون یاد رکھیں اکنامک کوریڈور میں بھی ہمارے صوبے کیلئے کچھ نہیں ہے سب کچھ پنجاب کے حصے میں دے دیا گیا ہے ،اور یہ بات کئی برس پہلے ولی خان بابا بتا چکے تھے کہ جب بھی حقوق کی بات ہوگی پختونوں کا حقوق غصب کئے جائیں گے،حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ اے این پی نے اپنے دور میں دہشت گردی کے خلاف بھاری قیمت چکائی ہے اور ایک ہزار کے لگ بھگ پارٹی ممبران اور کارکنوں کی قربانی دی کیونکہ ہم عوام کو تحفظ دینا چاہتے تھے اور یہی بات دہشت گردوں کو کھٹکتی تھی جس کی وجہ سے 2013کے الیکشن میں انہوں نے اے این پی کا مینڈیٹ اپنے دوستوں پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی کو دلوایا ، انہوں نے کہا کہ مذہبی جماعتوں کے رہنما بتائیں کہ ایک شخص کے مرنے پر پورے پاکستان میں ہنگامہ کھڑا کر نے والے شبقدر میں 20افراد کی شہادت پر کیوں خاموش ہیں ،انہوں نے طالبان سے اپیل کی آپ جو اسلام کے نام پر جنگ لڑ رہے ہیں اسے بند کر دیں کیونکہ اس جنگ سے 30سال میں کسی کو کچھ نہیں ملا سوائے پختونوں کے گھر برباد ہونے کے کچھ حاصل نہیں ہو سکا ، جبکہ اس لڑائی سے پاکستان مسلمان اور پختون دشمنوں کو فائدہ ہو رہا ہے ۔