مورخہ 31مارچ 2016ء بروز جمعرات

صحت سہولیات کے بلند وبانگ دعوے صرف اخبارات کی زینت ہیں، ہارون بشیر بلور
ڈائیلاسز مشینوں کی خرابی کے باعث عوام کی جانیں ضائع ہو رہی ہیں لیکن کسی حکومتی اہلکار نے نوٹس نہیں لیا ۔
حکومتی ٹیم نے اپنی توجہ بلین ٹری پر مرکوز کر رکھی ہے جس میں کرپشن کے حالیہ انکشاف نے نیا پنڈورا بکس کھول دیا ہے

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات ہارون بشیر بلور نے خیبر ٹیچنگ ہسپتال میں ڈائیلاسز مشینوں کی خرابی کے باعث 5افراد کی ہلاکت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ واقعے کی تحقیقات کر کے ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کی جائے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت آئے روز صحت سہولیات کے بارے میں بلند و بانگ دعوؤں میں مصروف ہے تاہم ہسپتالوں میں ہونے والی ہلاکتیں حکمرانوں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہیں ، انہوں نے غمزدہ خاندانوں کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کیا اور مزید کہا کہ یونیسف کی حالیہ رپورٹ میں صوبے کے بیشتر اضلاع کو صحت کے حوالے سے ہائی رسک ایریاز قرار دیا گیا ہے اور ان اضلاع میں ایسے علاقے بھی ہیں جہاں صحت کی سہولیات موجود ہی نہیں رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ان ایریاز میں موذی امراض پھیلنے کا خدشہ ہے تاہم حکومتی کارکردگی سوشل میڈیا اور اخبارات تک محدود ہے ، اور پوری ٹیم نے اپنی توجہ بلین ٹری پر مرکوز کر رکھی ہے جس میں ہو نے والی کرپشن کے حالیہ انکشافات نے نیا پنڈورا بکس کھول دیا ہے ، انہوں نے کہا کہ ہسپتالوں کی حالت زار کے باعث غریب عوام پریشان ہیں اور آئے روز ہونے والی ہلاکتوں نے عام شہریوں کو ذہنی کرب میں مبتلا کر دیا ہے ،انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ صوبے کے تدریسی ہسپتالوں میں صحت کی سہولیات کا نام و نشان تک نہیں جبکہ پیرا میڈیکس بھی اپنے مطالبات کیلئے احتجاج پر ہیں اور حکومت ان کے مطالبات تسلیم کرنے سے گریزاں ہے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ صوبے کے عوام کی حالت زار پر توجہ دے کر مینڈیٹ کا حق ادا کیا جائے۔