مورخہ : 26.3.2016 بروز ہفتہ

سیاسی مقاصد کیلئے کالا باغ ڈیم کا معاملہ دوبارہ اُٹھایا جا رہا ہے ۔ زاہد خان
پنجاب کے ووٹوں میں اضافے کیلئے چھوٹے صوبوں کے خلاف اقدامات وفاق کو کمزور کرنے کی سازش ہے۔
این ایف سی ایوارڈ پر عمل نہیں ہو رہا ۔ پنجاب کو پاکستان ثابت کرنے کی پالیسی بند ہونی چاہیے۔

پشاور ( پریس ریلیز ) عوامی نیشنل پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات زاہد خان نے مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس کے ایجنڈے میں کالا باغ ڈیم شامل کرنے پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ صوبائی اسمبلیوں کی کالا باغ ڈیم کے خلاف قراردادوں اور وفاق کی طرف سے کالاباغ تعمیر نہ کرنے کے اعلان کے باوجود پنجاب میں سے ووٹ حاصل کرنے کے لئے سبز باغ دکھانا عوام کے سمجھ میں بہت پہلے سے آچکا ہے ۔ یہ بات بار بار ثابت ہوچکی ہے کہ اب بھی صوبہ سندھ کے پانی کا حصہ پورا نہیں مل رہا ۔ پانی کی تقسیم منصفانہ نہیں اور وفاقی اکائیوں کی ناراضگیاں اور محرومیاں بڑھ رہی ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی صوبہ خیبر پختون خواہ کو قبرستان بناکر محلات تعمیر کرنے کی سوچ اور پالیسی نہیں چلنے دے گی۔ زاہد خان نے مزید کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ کی کامیابیوں سے توجہ ہٹانے کے لئے کالاباغ ڈیم کا معاملہ سیاسی مقاصد کے لئے دوبارہ اُجاگر کیا جارہا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ پنجاب کی ووٹوں میں اضافہ کیلئے چھوٹوں صوبوں کے خلاف قدامات وفاق کو کمزور کرنے کی سازش ہے ۔ صرف پنجاب کو پاکستان ثابت کرنے کی پالیسی بند ہونی چاہیے۔ این ایف اسی ایوارڈ پر عمل نہیں ہورہا ہے۔ صوبہ خیبر پختون خواہ کی بجلی کے خالص منافع کی ادائیگی وفاق سے رکی ہوئی ہے۔ کالا باغ ڈیم جیسے مردہ گوشت کو زندہ کرکے پاکستان کے خلاف سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے ۔ زاہد خان نے مزید کہا کہ جس طرح صوبہ پختون خواہ کے وزیر اعلیٰ اپنے سیاسی آقا عمران خان کے پنجاب میں ووٹ بڑھانے کے لئے غلام کا کردار ادا کررہے ہیں اور صوبائی حقوق کا سود ا کرکے صوبہ سے غداری کے مرتکب ہورہے ہیں پختون قوم کبھی معاف نہیں کرے گی۔