2016 سپیشل پولیس فورس کی مستقلی موجودہ حالات کا اہم تقاضاہے، سردار حسین بابک

سپیشل پولیس فورس کی مستقلی موجودہ حالات کا اہم تقاضاہے، سردار حسین بابک

سپیشل پولیس فورس کی مستقلی موجودہ حالات کا اہم تقاضاہے، سردار حسین بابک

مورخہ 29جنوری 2016ء بروز جمعہ
سپیشل پولیس فورس کی مستقلی موجودہ حالات کا اہم تقاضاہے، سردار حسین بابک
اہلکاروں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ڈٹ کر مقابلہ کیا اور دیگر سیکورٹی فورسز کے شانہ بشانہ کھڑے رہے ،
*اہلکار سالہا سال ڈیوٹی دینے کے بعد پولیس قوانین اور قواعد و ضوابط سے پوری طرح آگاہ ہو چکے ہیں
صوبائی حکومت امن و امان کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر سپیشل پولیس فورس کی بلاتاخیر مستقلی کے احکامات جاری کرے۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے سپیشل پولیس فورس کی جلد مستقلی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبے میں امن و امان کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر سپیشل پولیس فورس پر بھاری ذمہ داری عائد ہو تی ہے جبکہ ماضی میں بھی اس فورس کے اہلکاروں نے انتہائی سخت حالات میں صوبے کے تمام اضلا ع میں امن و امان کی صورتحال بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے ، اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری ایک بیان میں سردار حسین بابک نے کہا کہ سپیشل پولیس فورس کے اہلکاروں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ڈٹ کر مقابلہ کیا ہے اور پولیس فورس کے ایک اہم دستے کی حیثیت سے ہمیشہ دیگر سیکورٹی فورسز کے شانہ بشانہ کھڑی رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ سپیشل فورس کے اہلکاروں نے پولیس فورس کی تعداد میں کمی کے باوجود ان کے ہمراہ تمام مشکل حالات میں ان کا ساتھ دیا اور ہمیشہ مردانہ وار مقابلے کیلئے سپیشل فورس کے اہلکار فرنٹ لائن پر رہے، سردار بابک نے کہا کہ موجودہ صورتحال کے پیش نظر پولیس اہلکاروں کی تعداد میں کمی نظر آ رہی ہے لہٰذا صوبائی حکومت کو اس اہم مسئلہ پر خصوصی توجہ دیتے ہوئے سپیشل پولیس فورس کے اہلکاروں کی جلد اور بلاتاخیر مستقلی کے احکامات جاری کرنے چاہئیں، انہوں نے کہا کہ یہ اہلکار سالہا سال سے کام کرنے کی وجہ سے نہ صرف پولیس قوانین کے قواعد و ضوابط سے پوری طرح با خبر ہو چکے ہیں بلکہ اب یہ ایک تجربہ کار فورس بھی بن گئی ہے ،انہوں نے کہا کہ اب صوبائی حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ صوبے میں امن و امان کی موجودہ صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے ان اہلکاروں کی مستقلی کے احکامات جاری کرے ،تا کہ سپیشل فورس کے اہلکار مزید دلجمعی کے ساتھ کام کر سکیں،

شیئر کریں