مورخہ : 1.4.2016 بروز جمعہ

دہشتگردی کو جڑ سے اُکھاڑنے کیلئے مرکزی ، صوبائی حکومتوں کا عملی اتحاد لازمی ہے۔ زاہد خان
بلا تفریق کارروائیوں کے بغیر درکار نتائج برآمد نہیں ہوں گے۔
مسلم لیگ (ن) اب بھی دہشتگردوں کے سہولت کاروں اور ان کے ووٹوں کو قومی مفاد پر ترجیح دے رہی ہے۔

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات زاہد خان کے کہا کہ جب تک قومی مفادکو ذاتی مفاد پر ترجیح نہیں دی جاتی ملکی مسائل کا حل ناممکن ہے۔ دہشتگردی کو جڑ سے اکھاڑنے کے لئے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کا عملی اتحاد اور اتفاق لازمی ہے۔ بین الاقوامی ایجنڈے کے آلہ کاروں نے شہریوں کا سکون چین لیا ہے، اور ملک کو غیر محفوظ بنا رہے ہیں۔
اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری بیان میں زاہدخان نے کہا کہ قومی اداروں ، دفاعی تنصیبات ، عبادت گاہوں اور درسگاہوں کو نشانے بنانے والے تفریح گاہوں پر حملے کر کے قوم کا عزم کمزور کرنا چاہتے ہیں۔ جب تک بلا تفریق ملک بھر میں دہشت گردوں کے خلاف کاروائی نہیں ہوتی نتائج نہیں ملیں گے۔ اے این پی نے وفاق کی اتحادی جمہوری حکومت سے مل کر صوبہ خیبر پختون خواسے دہشت گردی ختم کرنے کے لئے صوبائی حکومت کی بجائے قومی مفاد کو ترجیح دی۔ پنجاب سے دوسری بار اسلام آباد پر حملہ ہوا ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ اور پنجاب حکومت کی خاموشی پہلے ہی سوالیہ نشان تھی اور اب صوبہ پنجاب میں دھشت گردوں اور سہولت کاروں کے خلاف اپریشن میں تاخیر سے قوم کے خدشات بڑھ رہے ہیں ۔ افواج پاکستان کی طرف سے ملک کے کونے کونے میں دہشت گردوں کے خلاف کاروائیاں خوش آئند ہیں۔ وفاقی وزیر داخلہ بلوچستان اور سندھ کی طرح پنجاب اور خیبر پختون خوا کے وزارئے اعلیٰ کو بھی افواج پاکستان سے تعاون پرتیار کرے۔ پنجاب کی حکومت صوبے میں اپریشن میں رکاوٹ بن رہی ہے، جس سے یہ بات ثابت ہو رہی ہے کہ مسلم لیگ (ن) دہشت گردوں کے سہولت کاروں کے ووٹوں کو قومی مفاد پر ترجیح دے رہی ہے۔