2016 خیبر پختونخوا کے عوام قربانیاں دے کر ملکی سا لمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں، ہارون بشیر بلور

خیبر پختونخوا کے عوام قربانیاں دے کر ملکی سا لمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں، ہارون بشیر بلور

خیبر پختونخوا کے عوام قربانیاں دے کر ملکی سا لمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں، ہارون بشیر بلور

خیبر پختونخوا کے عوام قربانیاں دے کر ملکی سا لمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں، ہارون بشیر بلور
نیشنل ایکشن پلان کے بعد دہشت گر دی کے خاتمے کی امید پیدا ہو گئی ہے تاہم اس کے تمام 20نکات پر عمل درآمد ضروری ہے
* ساری قوم کی نظریں دہشت گر دی کے خاتمے پر مر کوز ہیں،حکومت قوم کے تحفظ کیلئے سنجیدہ اقدامات کرے
عوام مر کزی اور صوبائی حکومتوں سے بیزار ہوچکے ہیں، باہمی اختلافات چھوڑ کر دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کام کرنا ہوگا

پشاور ( پ ر ) دہشت گر دی نے ملک اورخصوصاٌ صوبے کو تباہ کر دیا ہے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی نے اپنے دور حکومت میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جو قربانیاں دی ہیں ان کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔ اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری بیان میں صوبائی سیکرٹری اطلاعات ہارون بشیر بلور نے کہا کہ اے این پی عوامی پارٹی ہونے کے ناطے نہ صرف عوامی مسائل سے اگاہ ہے بلکہ مسائل کے حل کے لئے منصوبہ بندی اور عوام دوست پالیساں رکھتی ہے ،انہوں نے کہا کہ قومی ایکشن پلان کے آنے کے بعد دہشت گر دی کے خاتمے کی امید پیدا ہو گئی ہے اور ساری قوم کی نظریں دہشت گر دی کے خاتمے پر مر کوز ہیں تاہم اس نا سور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے نیشنل ایکشن پلان کے تمام 20نکات پر من و عن عمل کیا جانا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ اے این پی کے دور حکومت میں بم دھماکوں کے حوالے سے ہم پر بے جا اور بے بنیاد الزامات لگائے گئے اور کہا گیا کہ ہم پرائی جنگ اپنے خطے میں لے کر آئے ہیں،لیکن اب جبکہ اے این پی اقتدار میں نہیں ہے تو ان دھماکوں کی ذمہ داری کس پر عائد ہوتی ہے ، انہوں نے کہا کہ یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ اس وقت ہم پر لگائے جانے والے الزامات غلط اور بے بنیاد تھے ،انہوں نے کہا کہ دہشت گر دی نے ملک اورخصوصاٌ صوبے کو تباہ کر دیا ہے تاہم موجودہ صوبائی حکومت کی نا اہلی اور غیر سنجیدگی کے باعث دہشت گرد اپنی مذموم کاروائیوں میں کامیاب ہو جاتے ہیں ،ترجمان نے کہا کہ عوام مر کزی اور صوبائی حکومتوں سے بیزار ہوچکے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ لوگوں کی نظریں اور توقعات اے این پی سے وابستہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ پختون دہشت گر دی کے خلاف بے پناہ قر بانیاں دے کر ملکی سالمیت کی جنگ لڑ رہے ہیں۔لہذا حکومت کی طرف سے قوم کو تخفظ دینے کے لئے عملی اور سنجیدہ اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور عمران خان دہشت گر دی کے خلاف لڑی جانیوالی جنگ میں سنجیدگی کا مظاہرہ کر یں اور غیر ضروری سر گر میوں میں وقت ضائع کئے بغیر دہشت گر دی سے نمٹنے کے لئے چوکس ہو جائیں ورنہ آیندہ نسلیں انہیں معاف نہیں کر یں گی۔

شیئر کریں