مورخہ 3فروری 2016ء بروز بدھ

حکومت نے ہڑتالی ملازمین کے پروں کی بجائے سر ہی کاٹ دیئے۔ حاجی محمد عدیل
مظاہرین کے درمیان نا اتفاقی اور غیر ملکی پائلٹوں کے ذریعے پی آئی اے کوچلانے کا منصوبہ ناکام ہو گیا
نجکاری کی مخالفت کرنے والے سرحد ڈیولپمنٹ اتھارٹی اور پیڈرو جیسے اداروں کو پرائیویٹائز کر رہے ہیں

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی محمد عدیل نے کہا ہے کہ پی آئی اے کے ملازمین پر تشدد اور فائرنگ نے وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید کے اس بیان کی تصدیق کر دی ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ہڑتال کرنے والوں کے پر کاٹ دیں گے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ احتجاجی ملازمین کے پر وں کی بجائے سر ہی کاٹ دیئے گئے جبکہ اس کے نتیجے میں پی آئی اے جیسے قومی ادارے کے پر کاٹ دیئے گئے ہیں،انہوں نے کہا کہ حکومت کی خام خیالی تھی کہ وہ ہڑتالی ملازمین کے درمیان نا اتفاقی پیدا کر کے غیر ملکی پائلٹوں کے ذریعے پی آئی اے کو چلا لیں گے تاہم وہ منصوبہ نہ صرف بری طرح ناکام ہو گیا بلکہ اب تو دیگر اداروں کے مزدوروں نے بھی پی آئی اے کی حمایت میں مظاہروں کا اعلان کر دیا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کی توجہ اس جانب مبذول کرانا لازمی ہے کہ خیبر پختونخوا کی حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے آج صوبے کے تمام بڑے ہسپتالوں میں ڈاکٹروں کی ہڑتال کے باعث نظام مفلوج ہو چکا ہے اور مریضوں کا کوئی پرسان حال نہیں ،انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 6فروری کو جس مظاہرے کا اعلان کیا ہے ایسا نہ ہو کہ خود ان کی حکومت کے خلاف ہی مظاہرین اس احتجاج کا رخ کر لیں ، انہوں نے کہا کہ آج نجکاری کی مخالفت کرنے والے پہلے اپنے گریبان میں جھانکیں کیونکہ وہ سرحد ڈیولپمنٹ اتھارٹی اور پیڈرو جیسے اداروں کو پرائیویٹائز کر رہے ہیں