مورخہ : 13.2.2016 بروز ہفتہ

حکومت تاجروں سمیت شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔ سینیٹر ستارہ ایاز
ٹارگٹ کلنگ ، بھتہ خوری اور دیگر جرائم نے عوام اور اہم حلقوں کو پریشان کر کے رکھ دیا ہے۔
دہشتگردی کے شکار صوبے کی معیشت کو کئی خطرات کا سامنا ہے، حکومتی غفلت کے سنگین نتائج برآمد ہونگے۔

پشاور (پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی نائب صدر سینیٹر ستارہ ایاز نے صوبے میں امن وامان کی بگڑتی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبائی حکومت دیگر ایشوز کی طرح امن و امان کے قیام اور عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں بھی ناکام ہو گئی ہے اور اگر ٹارگٹ کلنگ ، بھتہ خوری اور دیگر جرائم پر قابو پانے کی سنجیدہ کوشش نہیں کی گئی تو صورتحال قابو سے باہر ہو جائیگی۔
اے این پی سیکرٹریٹ سے جاریکردہ بیان کے مطابق سینیٹر ستارہ ایاز نے کہا ہے کہ مختلف مسالک ، طبقوں اور حلقوں سے تعلق رکھنے والے اہم لوگوں کو جس بے دردی سے نشانہ بنایا جا رہا ہے اس نے حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔ صرف پشاور میں کچھ ہی عرصے کے دوران نصف درجن سے زائد اہم لوگوں کو ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا جبکہ سینکڑوں تاجروں کو مسلسل دھمکیاں دینے کی اطلاعات نے اس اہم طبقے کو پریشان کر کے رکھ دیا ہے۔ تاہم حکومت اپنی ذمہ داریوں سے غافل ہے اور حالات نے تشویشناک شکل اختیار کی ہوئی ہے۔
اُنہوں نے مزید بتایا کہ صوبے کو پہلے ہی سے دہشتگردی اور انتہا پسندی نے بے شمار مسائل میں جکڑ رکھا ہے اوپر سے ٹارگٹ کلنگ ، بھتہ خوری اور اغواء برائے تاوان کی حالیہ لہر نے صوبے کی معیشت کو ایک نئے خطرے سے دوچار کر دیا ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ تاجروں سمیت تمام شہریوں کو تحفظ فراہم کرنا اور ان کی شکایات کا ازالہ کرنا حکومت کی بنیادی ذمہ داریوں میں شامل ہے۔اگر حکومت اسی طرح غفلت کا مظاہرہ کرتی رہی تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔