2016 حکومتی قرضوں میں اضافہ ملک کو دیوالیہ کرنے کی سازش ہے ، امیر حیدر خان ہوتی

حکومتی قرضوں میں اضافہ ملک کو دیوالیہ کرنے کی سازش ہے ، امیر حیدر خان ہوتی

حکومتی قرضوں میں اضافہ ملک کو دیوالیہ کرنے کی سازش ہے ، امیر حیدر خان ہوتی

مورخہ 31جنوری 2016ء بروز اتوار
حکومتی قرضوں میں اضافہ ملک کو دیوالیہ کرنے کی سازش ہے ، امیر حیدر خان ہوتی
حکومت اپنی عیاشیوں اور مالیاتی خسارہ پورا کرنے کیلئے قرضوں پر انحصار کر رہی ہے ،
قرضوں کی مالیت 20ہزار ارب روپے سے تجاوز کر گئی ہے،ہر شہری ایک لاکھ15ہزار روپے کا مقروض ہے
کشکول توڑنے کے دعویداروں نے ملک کو کشکول تک ہی محدود کر دیا، ملک دیوالیہ ہونے کے قریب ہے
غریب ملک کے کھرب پتی حکمران عوام مسائل پر توجہ دینے کی بجائے تجوریاں بھرنے میں مصروف ہیں
پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے سٹیٹ بنک کی طرف سے جاری کی گئی رپورٹ پر انتہائی تشویش کا اظہار کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ 27ماہ کے دوران حکومتی قرضوں میں ساڑھے چار ہزار ارب روپے کا اضافہ ہو چکا ہے اور اس کے نتیجے میں اب ہر شہری ایک لاکھ15ہزار روپے کا مقروض ہے ، اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی عیاشیوں اور مالیاتی خسارہ پورا کرنے کیلئے قرضوں پر انحصار کر رہی ہے جس کے باعث قرضوں کی مالیت 20ہزار ارب روپے سے بھی تجاوز کر گئی ہے ، انہوں نے کہا کہ کشکول توڑنے کے دعویداروں نے ملک کی معیشت کا بیڑا غرق کر کے رکھ دیا ہے جبکہ غریب عوام دو وقت کی روٹی کو ترس رہے ہیں انہوں نے گزشتہ دنوں بعض اخبارات میں شائع ہونے والی اس پورٹ کا بھی ذکر کیا جس میں کہا گیا تھا کہ ملک میں کروڑوں لوگ غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ملک وسائل سے مالا مال ہے تاہم یہ چور حکمرانوں کی عیاشیوں کا متحمل نہیں ہو سکتا ، انہوں نے کہا کہ حکومت قرضوں کی اصل رقم سے ڈیڑھ گنا زائد سود ادا کر رہی ہے اور نواز شریف کے موجودہ دور میں قرضوں کی مالیت میں 4368ارب روپے کا اضافہ ہو چکا ہے ، صوبائی صدر نے کہا کہ مرکزی حکومت جس انداز سے قرضے لے رہی ہے اس کا براہ راست اثر غریب عوام پر پڑ رہا ہے اور اب ملک کا ہر شہری مزید 24ہزار روپے کا مقروض ہو چکا ہے جو قوم کیلئے لمحہ فکریہ ہے ، انہوں نے کہا کہ حکومت قرضوں کی حد محدود رکھنے کیلئے 2005میں متعارف کرائے گئے فسکل رسپانسبیلٹی اینڈ ڈیبٹ لمیٹیشن ایکٹ کی مسلسل خلاف ورزی کر رہی ہے جو اب ناقابل برداشت ہو چکا ہے ، انہوں نے کہا کہ حکمران اپنی عیاشیوں کو محدود کریں اور قوم کی دولت لوٹنے کی بجائے عوام کے مسائل کے حل پر اپنی توجہ مرکوز کریں جس کیلئے عوام نے انہیں مینڈیٹ دیا ہے، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ زیر گردش کرنسی میں بے پناہ اضافہ ملکی معیشت کیلئے تباہ کن ہے اور اگر حکمرانوں نے اس پر فوری توجہ نہ دی تو ملک دیوالیہ ہو جائیگا جس کی تمام ذمہ داری مرکزی حکومت پر عائد ہو گی،

شیئر کریں