مورخہ یکم مئی2016ء بروز اتوار

حکمران بلدیاتی نظام کو لولا لنگڑا کرنے کاکوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے ، امیر حیدر خان ہوتی
تبدیلی کے دعویداروں نے بلدیاتی نظام کو اب تک صدق دل سے تسلیم نہیں کیا،
ترقیاتی فنڈمیں کٹوتی بلدیاتی نظام پر آخری وارہے، اے این پی خاموش نہیں رہے گی۔
حکومت کے بلدیات دشمن اقدامات کے خلاف صوبائی اسمبلی سمیت ہر فورم پرآواز اٹھائی جائے گی۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی نے بلدیاتی نمائندوں کے ترقیاتی فنڈز میں75%فیصد کٹوتی پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے صوبائی حکومت کی نااہلی قراردیاہے اورکہاہے کہ تبدیلی کے دعویداروں نے بلدیاتی نظام کو اب تک صدق دل سے تسلیم نہیں کیاہے اور نظام کو لولا لنگڑا کرنے کے لئے کوئی بھی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتی ،صوبائی حکومت کافیصلہ بلدیاتی نمائندوں کے مینڈیٹ کی توہین ہے وہ ہوتی ہاؤس مردان میں پارٹی کے صوبائی نائب صدر اور تحصیل کونسلر محمد جاوید یوسفزئی کی قیادت میں بلدیاتی نمائندوں کے ایک وفد سے خطاب کررہے تھے وفد کے ارکان نے سابق وزیراعلیٰ کو حکومتی اقدامات اوراپنے مسائل سے اگاہ کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ وزارت اعلیٰ چھوڑتے وقت حکمرانوں کوصوبہ کا خزانہ بھرا دیا تھاتاہم عوام نہیں جانتے کہ صوبائی حکومت کس مد میں فنڈز خرچ کررہی ہے کیونکہ اے این پی کے دور حکومت کے منصوبے یا تو بند پڑے ہیں اوریا سست روی کے شکارہیں جبکہ موجودہ حکومت نے کوئی میگا پراجیکٹ شروع نہیں کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ پی ٹی آئی کی حکومت بلدیاتی نظام سے مخلص نہیں ہرمعاملے میں یوٹرن کے ماہر صوبائی حکومت شروع دن سے اس نظام کو ناکام بنانے کے لئے مختلف حربے استعمال کررہی ہے ان کاکہناتھاکہ پی ٹی آئی کی حکومت پہلے الیکشن سے راہ فرار اختیار کررہی تھی لیکن اعلیٰ عدلیہ کے احکامات نے اسے انتخابات پر مجبورکیا انہوں نے کہاتبدیلی کے دعویداروں نے پہلے ہی بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات کم کئے اور نظام کو لولا لنگڑا کرکے اس کے ساتھ آدھا تیتر آدھابٹیر والا معاملا کردیا اب ترقیاتی فنڈمیں75%کٹوتی کرکے نظام پر آخری وار کردیاہے لیکن اے این پی حکومتی اقدامات پر خاموش نہیں بیٹھے گی انہوں نے بلدیاتی نمائندوں کو یقین دلایاکہ ان کی پارٹی ہر سطح پر عوامی نمائندوں کے ساتھ کھڑی ہوگی اور حکومت کے بلدیات دشمن اقدامات کے صوبائی اسمبلی سمیت ہر فورم پرآواز اٹھائے گی۔