مورخہ : 31.5.2016 بروز منگل

بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ سردار حسین بابک
صوبائی حکومت مالی اور انتظامی بدحالی کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔
عوام اور خصوصاً پختون تبدیلی سرکار کی اصلیت جان چکے ہیں اور ان کی اُلٹی گنتی شروع ہو چکی ہے۔
اے این پی بلدیاتی نمائندوں کے احتجاج میں برابر کی شریک ہے،صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی۔

پشاور ( پریس ریلیز) اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبے کے طول و عرض میں بلدیاتی نمائندے اختیارات اور فنڈز کے حصول کیلئے سراپا احتجاج ہیں اور صوبائی حکومت نچلی سطح پر اختیارات کی منتقلی کے دعوے کرتی نہیں تھکتی۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت عوامی مینیڈیٹ کو تسلیم کر تے ہوئے صوبائی اسمبلی سے پاس شدہ قانون کی پاسداری کرتے ہوئے صوبے کے بلدیاتی نمائندوں کو فوری طور پر 43 ارب روپیہ منتقل کر دیں۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی وزیر بلدیات اسمبلی فلور پر مبالغہ آرائی سے کام لیکر بلدیاتی نمائندوں کو فنڈز اور اختیارات کی منتقلی کے مسلسل دعوے کر رہے ہیں لیکن زمینی حقائق اس کے بالکل برعکس ہیں۔ صوبے کی تمام پارٹیوں اور آزاد ارکان بلدیات پچھلے دس ماہ سے مسلسل احتجاج کر رہے۔ اُنہوں نے کہا کہ بلدیاتی نمائندے عوام کے منتخب نمائندے ہیں اور عوام کے مینڈیٹ کی توہین کسی صورت برداشت نہیں کرینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی نمائندوں کے احتجاج میں برابر کی شریک ہے اور بلدیاتی نمائندوں کو اپنے حقوق کیلئے منظم اور مسلسل انداز میں پر امن احتجاج جاری رکھنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت مالی اور انتظامی بدحالی کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کے ناروا روئیے اور غیر جمہوری طریقہ کار کی وجہ سے صوبے کے ہر طبقہ فکر کے لوگ حکومت کے خلاف سراپا احتجاج اور سڑکوں پر آئے ہیں لیکن صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی۔ اُنہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے صوبے کو مسائل اور مشکلات کے دلدل میں پھنسا دیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ دن بہ دن عوام تبدیلی سرکار سے نالاں اور بدظن ہوتے جا رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ بلدیاتی نظام اور بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی موجودہ حکومت کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ تحریک انصاف عوامی مسائل سے بے خبر اور حکومتی اُمور چلانے سے نا بلد ہونے کی وجہ سے سارا نزلہ عوام پر گرتا جا رہا ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے تین سال لوگوں پر الزامات لگانا ، پگڑیاں اُچھالنا اور نان ایشوز میں وقت ضائع کر دیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ عوام اور خصوصاً پختون تبدیلی سرکار کی اصلیت جان چکے ہیں اور ان کی اُلٹی گنتی شروع ہو چکی ہے اور اپنی ڈوبتی ہوئی کشتی بچانے میں بری طرح ناکام ہوں گے۔