2016 باچا خان یونیورسٹی چارسدہ پر حملے کے خلاف اے این پی لندن کا مظاہرہ

باچا خان یونیورسٹی چارسدہ پر حملے کے خلاف اے این پی لندن کا مظاہرہ

باچا خان یونیورسٹی چارسدہ پر حملے کے خلاف اے این پی لندن کا مظاہرہ

ANP's protest in London

مورخہ 24جنوری 2016ء بروز اتوار
باچا خان یونیورسٹی چارسدہ پر حملے کے خلاف اے این پی لندن کا مظاہرہ
عدم تشدد کے عظیم علمبردار باچا خان کے نام پر قائم درسگاہ کو حملے کا نشانہ بنانا قابل مذمت ہے
نیشنل ایکشن پلان پر پوری طرح عملدرآمد نہیں ہو رہاجس کے باعث دہشت گرد دوبارہ منظم ہوئے
خیبرپختونخوا حکومت اس حملے کی روک تھام میں ناکامی سے خود کو بری الزمہ قرار نہیں دے سکتی ،

پشاور(پ ر ) باچاخان یونیورسٹی چارسدہ پر حملے کیخلاف عوامی نیشنل پارٹی کے زیر اہتمام لندن میں پاکستانی ہائی کمشنر کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔ مظاہرے کی قیادت اے این پی برطانیہ کے صدر محفوظ جان ‘ جنرل سیکرٹری جاوید اخونزادہ ‘ سول سوسائٹی کے شاہی سلطان خان ‘ رحیم شاہ اور ذاکر حسین ایڈوکیٹ کر رہے تھے ۔ مظاہرین نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھاکہ دہشتگردپختون خطے میں امن اور تعلیم نہیں چاہتے یہی وجہ ہے کہ وہ دوسرے طبقوں کے علاوہ تعلیمی اداروں کو مسلسل حملوں کا نشانہ بنا رہے ہیں تاکہ پختونوں کی نئی نسل کو خوفزدہ کر کے تعلیم سے دور رکھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ عدم تشدد کے عظیم علمبردار باچا خان کے نام پر قائم درسگاہ کو اس قسم کے حملے کا نشانہ بنانا اس بات کا ثبوت ہے کہ انتہا پسند دہشتگردی کے ذریعے ہمیں جاہل اور پسماندہ رکھنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ انہوں نے کہاکہ نیشنل ایکشن پلان پر پوری طرح عملدرآمد نہیں ہو رہاتا ہم اس قسم کے چیلینجز کے باوجود اے این پی امن کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت اس حملے سمیت دیگر کارروائیوں کی روک تھام میں ناکامی سے خود کو بری الزمہ قرار نہیں دے سکتی اور پیشگی اطلاعات کے باوجود سیکیورٹی کے انتظامات سے غافل رہنے کے حکومتی رویے نے بہت سے خدشات اور سوالات کو جنم دے رکھا ہے۔انہوں نے کہاکہ اس سے قبل بھی وفاقی حکومت نے 14 دسمبر 2015 ء کو شدت پسندوں کے حملوں سے صوبائی حکومت کو آگاہ کیا تھا کہ اور اس سلسلے میں وفاقی وزارت داخلہ نے خیبرپختونخوا حکومت کو کئی با ردھمکی کے پیشگی اطلاع کے مراسلے بھجوائے گئے تھے تاہم صوبائی حکومت نے کوئی غور نہیں کیا جس سے طلباء کی قیمتی جانیں ضائع ہوئیں، انہوں نے کہاکہ اے این پی شہید اور زخمی طلباء کے لواحقین کے غم میں برابرکی شریک ہے۔

شیئر کریں