مورخہ : 17.2.2016 بروز بدھ

اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک سے شہد ٹریڈرز ایسوسی ایشن کے نمائندہ وفد کی ملاقات
مگس بانی سے وابستہ افراد کیساتھ تعصب کی بنیاد پر پنجاب حکومت کا روریہ قابل مذمت ہے۔ سردار حسین بابک

پشاور(پ،ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری اور پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کا مگس بانی سے وابستہ خیبر پختون خوا کے لاکھوں افراد سے روزگار چھیننے کا رویہ قابل مذمت ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے باچاخان مرکز میں آل پاکستان کیپرایکسپورٹر شہد ٹریڈرز ایسوی ایشن کے وفد سے ملاقات میں کیا،انہوں نے وفد کو تسلی دی کہ عوامی نیشنل پارٹی اس سلسلے میں مگس بانی سے وابستہ افراد کے حقوق کے لیے ہر فورم پر بھر پور آواز اٹھائے گی،سردار حسین بابک نے کہا کہ دہشت گردی کی وجہ سے خیبر پختون خوا میں جنگلات اور باغات تباہ ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے شہد کے کاروبار سے وابستہ افراد کو پنجاب اور آزاد کشمیر کا رخ کرنا پڑتاہے،مگر افسوس کی بات ہے کہ پنجاب حکومت مگس بانی سے وابستہ افراد کو اپنے صوبے میں داخل ہونے نہیں دیتے،جس سے ملکی خزانے کو اربوں روپے کا فائدہ دینے والوں کو بے جا تنگ کیاجارہاہے،انہوں نے کہا کہ پاکستان چار اکائیوں کا مشترکہ ملک ہے،اور کسی بھی اکائی کو یہ زیب نہیں دیتا کہ وہ دو سرے صوبے کے ساتھ معتصابانہ رویہ رکھے ،انہوں نے کہا کہ اس قسم کے رویے ملکی استحکام اور بھائی چارے کے لیے نیک شگون نہیں ہیں،انہوں نے کہا کہ پنجاب بڑے بھائی کا کردار ادا کریں اور شہد کے کاروبار سے وابستہ چھ لاکھ افراد کی مشکلات کو سمجھیں ،انہوں نے کہا کہ پنجاب اور آزاد کشمیر حکومت کی اس روش کی وجہ سے ملک میں شہد کے کاروبار کو بہت بڑا نقصان پہنچ سکتاہے،جس سے ملکی خزانے کو فائدے کی بجائے اربوں روپے کے نقصان کا اندیشہ ہے۔