مورخہ : 18.4.2016 بروز پیر

اے این پی کا 19 اپریل کو صوبہ بھر ، قبائلی علاقہ جات اور ایف آرز میں جشن خیبر پختونخوا منانے کا فیصلہ۔
اس سلسلے میں مرکزی تقریب 19 اپریل کو باچا خان مرکز میں منعقد ہو گی۔
دیگر اہداف ک8ے حصول کے علاوہ صوبے کو اس کی قدیم شناخت اور تاریخی نام دینے پر پارٹی کو فخر ہے۔ امیر حیدر خان ہوتی

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے پارٹی کے تمام ضلعی صدور ، قبائلی علاقہ جات اور ایف آرز کے تنظیمی عہدیداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ آج (بروز منگل) جشن خیبر پختونخوا منانے کی تقاریب منعقد کریں۔ اپنے ایک بیان میں اُنہوں نے اے این پی اور تمام ذیلی تنظیموں کو ہدایات جاری کر دی ہے کہ وہ جشن کی اس تقاریب کا انعقاد کریں۔ جشن پختونخوا کی مرکزی تقریب آج (بروز منگل) دوپہر دو بجے باچا خان مرکز میں منعقد ہوگی۔ جس میں پارٹی کے قائدین شرکت کریں گے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اے این پی نے اپنے دور اقتدار میں اپنی جدوجہد کے ذریعے متعدد دیگر اہداف کے حصول کے علاوہ صوبے کو قدیم اور تاریخی نام کی شکل میں اس کی شناخت دی جس پر اے این پی کے قائدین اور کارکنوں کو فخر ہے۔ اس لیے اسی کامیابی کو یاد کرنے کیلئے 19 اپریل کو جشن خیبر پختونخوا منایا جائیگا۔

اُنہوں نے صوبائی حکومت کی پالیسیوں کو ناکام اور ناقص قرار دیتے ہوئے کہا کہ تین برس میں تحریک انصاف اور ان کے اتحادیوں نے صوبے کے حقوق کے حصول اور مسائل کے حل کیلئے کوئی بھی عملی قدم نہیں اُٹھایا اور صوبے کے مفادات داؤ پر لگے ہوئے ہیں۔
اُنہوں نے کہا کہ خیبر بینک سمیت صوبے کے آثاثوں کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائیگا اور اگر حکومت اور اس کے اتحادیوں نے صوبے کے مفادات کو یقینی نہیں بنایا اور اپنی نااہلی اور آپس کی لڑائیوں کے ذریعے عوام کی قسمت سے کھیلنے کا اپنا رویہ جاری رکھا تو عوامی سطح پر ان کی مزاحمت کی جائیگی۔
اُنہوں نے مزید کہاکہ روزانہ کی بنیاد پر سینکڑوں افراد کی اے این پی میں شمولیت اس بات کا ثبوت ہے کہ عوام اے این پی ہی کو اپنے حقوق کی ضامن قوت سمجھتے ہیں اور دوسری پارٹیوں پر سے ان کا اعتماد ختم ہو چکا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ 2018 موجودہ حکمرانوں کے سیاسی محاسبے کا سال ثابت ہو گا اور اے این پی عوام کی بھرپور حمایت سے ایک بار پھر تاریخی مینڈیٹ حاصل کرے گی۔
دونوں اجتماعات کے دوران علاقے کے سینکڑوں افراد نے جماعت اسلامی اور دیگر پارٹیوں سے مستعفی ہو کر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ اجتماعات سے پارٹی کے دیگر عہدیدران ، شمس بونیری ، ڈاکٹر عمر حیات خان ، اشتر خان ، درویش خان ، زمان خان اور اعجاز خان نے بھی خطاب کیا۔