مورخہ 8اپریل2016ء بروز جمعہ
اے این پی کا پختونخواکے عوامی مسائل پر عدم توجہی کے خلاف احتجاج کا اعلان
صوبے میں دہشت گردی ، ناگہانی آفات کے مواقع پر مرکزی و صوبائی حکومتیں پختون قوم کو بے یارو مدد گار چھوڑ دیتی ہیں
میر علی اور میرانشاہ میں 11 ہزار دکانیں تباہ ہوئیں گھر مسمار ہوئے اور حکومتوں نے کوئی مدد نہ کی
عمران خان اور سراج الحق پاجامہ لیکس کو اور زیادہ پھیلانے کی بجائے بے یارو مددگار متاثرین سیلاب کی مدد کریں
مالاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس کا نفاذ کسی صورت قبول نہیں ، زاہد خان اور سینیٹرشاہی سید کی میڈیا سے بات چیت

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے صوبہ خیبر پختونخواکے عوامی مسائل پر مرکزی و صوبائی حکومتوں کی عدم توجہی کے خلاف پارلیمنٹ اور پارلیمنٹ کے باہر پر زور احتجاج کا اعلان کر دیا ہے ۔دہشت گردی سے متاثرہ پسماندہ ترین اضلاع مالاکنڈ ڈویژن میں کسٹم ایکٹ کے نفاذ کو بھی عوام دشمن اور ظالمانہ قرار دیا گیا ہے ۔عوامی نیشنل پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات زاہد خان اور سینیٹر شاہی سید نے پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا میں دہشت گردی ، ناگہانی آفات کے مواقعوں پر مرکزی و صوبائی حکومتیں پختون قوم کو بے یارو مدد گار چھوڑ دیتی ہیں فاٹا میں دہشت گردی کے خاتمے کیلئے شروع کیے گئے اپریشن ضرب عضب کے موقع پر بھی آئی ڈی پیز بے سرو سامانی میں تھے اور وفاقی حکومت صوبائی حکومت کے وزراء اور عمران خان کو ناچ گانے کی سہولیات اور کھانے فراہم کر کے میزبان بنے ہوئے تھے ۔ دونوں رہنماؤں نے کہا کہ میر علی اور میرانشاہ میں 11 ہزار دکانیں تباہ ہوئیں گھر مسمار ہوئے اور حکومتوں نے کوئی مدد نہ کی ، حالیہ سیلاب میں150 شہری جاں بحق اور ضلع کوہستان ملک سے کٹ کر رہ گیا ہے کئی دیہات زیر آب ہیں وفاق اور صوبہ کی طرف سے کوئی پرسان حال نہیں ۔ سینیٹر زاہد خان نے وزیر اعظم سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزارت مواصلات کے انچارج کے طور پر شاہراہ ریشم کی 18 کلو میٹر بہہ جانے والی سٹرک بحال کی جائے ۔سینیٹر زاہد خان نے کہا کہ عمران خان اور سراج الحق پاجامہ لیکس کو اور زیادہ پھیلانے کی بجائے بے یارو مددگار متاثرین سیلاب کی مدد کریں ۔ سینیٹر زاہد خان نے کہا کہ ڈی سی او کوہستان متاثرین سیلاب کی مدد کے لئے ہیلی کاپٹر مانگ رہا ہے جو فراہم نہیں کیا جارہا متاثرہ علاقے میں شہری ، روٹی اور چھت سے محروم ہیں ، وزیراعلیٰ پرویز خٹک اور عمران خان سرکاری ہیلی کاپٹروں میں مزے لے رہے ہیں ۔ سینیٹر شاہی سید نے کہا کہ مالاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس کا نفاذ کسی صورت قبول نہیں ٹیکس واپسی تک ایوان بالاء میں بھرپور احتجاج جاری رہے گا۔