مورخہ : 30.4.2016 بروز ہفتہ
اگر عمران خان پر کڑا وقت آگیا تو ان کی کشتی سے سب سے پہلے چھلانگ لگانے والے پرویز خٹک ہوں گے۔ حیدر خان ہوتی
پرویز خٹک نے پیر صابر شاہ کی حکومت کے خاتمے کیلئے ممبران کے ضمیروں کا سودا کیا۔ وہ ہر حکومت کا حصہ رہے ہیں۔
موجودہ حکمرانوں کی فائلیں کھل چکی ہیں اب ان کو اپنے کیے کی جوابدہی کرنی پڑے گی۔
عوام 2018 میں ان کا محاسبہ کریں گے۔ پی کے 30 مردان میں شمولیتی اجتماع سے خطاب

پشاور (پریس ریلیز ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پرویز خٹک بے بنیاد الزامات چھوڑ کر اپنی صحت پر توجہ دیں ،دنیا جانتی ہے کہ اسفند یارولی خان کون ہیں انگریز وں سے آزادی اور آمریت کے خلاف ہماری جدوجہدسے تاریخ بھری پڑی ہے ،عمران خان پر کڑا وقت آیا تو کشتی سے پہلے چھلانگ لگانے والے پرویز خٹک ہی ہوں گے ،بلین ٹری سونامی سیاست رشوت کے طورپر استعمال کی جارہی ہے ،فائلیں کھل گئی ہیں سرکاری اراضی کوڑیوں کے دام دینے والوں کو جواب دینا ہوگاوہ ہفتہ کی شام حلقہ پی کے 30کے علاقہ ملیانوکلے میں ایک بڑے شمولیتی جلسے سے خطاب کررہے تھے جس میں سینکڑوں افراد نے مختلف سیاسی پارٹیوں سے مستعفی ہوکر اے این میں شمولیت اختیارکی امیر حیدر خان ہوتی نے انہیں سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور ان کا پارٹی میں خیر مقدم کرتے ہوئے انہیں مبارکباد پیش کیااے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی نے وزیراعلیٰ پرویز خٹک کو براہ راست تنقید کانشانہ بناتے ہوئے کہاکہ جب بے نظیر بھٹو پر مشکل وقت آیا تو اس نے پارٹی کو خیر آباد کہا آفتاب شیرپاؤ کی پارٹی کی صوبائی صدارت کے ساتھ ہماری حکومت کا حصہ بنے اورچارسال تک وزارت کے مزے لوٹے لیکن کھبی کابینہ میں بات تک نہیں کی انہوں نے کہاکہ اگر عمران خان پر آزمائش آتی ہے تو وزیراعلیٰ اپنی تاریخ دہرائیں گے اے این پی کے صوبائی صدر نے الزام عائد کیاکہ 1993میں پیر صابر شاہ کی حکومت کے لئے خاتمے کے لئے پرویز خٹک نے رات کے اندھیرے میں بریف کیس لے کر ممبران کی ضمیروں کا سودا کیاانہوں نے کہاکہ آج وہ میری حیثیت کے بارے میں سوالات اٹھارہے ہیں انہوں نے کہاکہ وہ ہوتی کے لخکرخیل خاندان سے ہیں والد اعظم ہوتی ،داد اامیرمحمد خان ہوتی ،پر داداغلام حیدرخان ہوتی ہیں اللہ تعالیٰ کا دیاہوا اتناکچھ ہے کہ وزیراعلیٰ پوری زندگی پیدل سفر کریں تو ہماری جائیداد کا احاطہ نہیں کرسکتے امیرحیدرخان ہوتی نے وزیراعلیٰ کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنی صحت پر توجہ دیں اچھا کھائیں انہوں نے کہاکہ ضلع ناظم مردان کے خلاف سازشوں سے ہم باخبرہیں لیکن صوبائی وزیراعلیٰ کو معلوم ہوناچاہئے کہ وہ اس کا بھائی بھی ضلع ناظم ہیں اوروہ اتنا ظلم کریں جتنا کل برداشت کرسکتے ہیں شیش محل میں رہنے والوں دوسروں پر پتھر پھینکے سے پہلے اتنا ظلم کریں جتنا کل برداشت کرسکتے ہوں امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ موجودہ حکمرانوں کی فائلیں کھل گئی ہیں اور انہیں جواب دنیا ہوگاکہ ملم جبہ میں کروڑوں کی اراضی کس طرح کوڑیوں کے دام الاٹ کی گئی انہوں نے کہاکہ سونامی ٹری منصوبہ سیاسی منصوبہ میں بدل چکاہے اور حکمران اپنے چہیتوں کو نوازرہے ہیں اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ عمران خان وزیراعظم بننے کے لئے پنجاب کی سیاست کررہے ہیں جبکہ میاں نوازشریف اپنی کرسی بچانے میں لگے ہوئے ہیں دونوں کو پختون قوم کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں انہوں نے کہا کہ نام نہاد تبدیلی کے جھوٹے دعوؤں سے عوام بے زارہوچکے ہیں اوران کی نظریں اے این پی پر لگی ہوئی ہیں 2018 کے انتخابات میں پختون ووٹ کے ذریعے اپنی حق تلفیوں کا بدلہ لیں گے اور نئے پاکستان بنانے والوں کو بنی گالہ واپس بیجھ کر دم لیں گے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی اورصوبائی حکومت نہ جانے پختونوں کو کس جرم کی سزا دے رہی ہیں تبدیلی کے دعویداروں نے روزگار کے متلاشی نوجوانوں کو تین سال بعد چوہے مارنے پر لگادیاہے انہوں نے کہاکہ پختون قوم مسائل اورمصائب کے شکارہیں کپتان چارحلقوں کے لئے 126دن دھرنا تو دیتے ہیں لیکن پختون قوم کے مسائل پر خاموشی اختیار کررکھی ہے انہوں نے کہاکہ پختون قوم کو مشکلات سے نکلنے کے لئے سرخ جھنڈا تلے متحد ہوناہوگا پختون اب بیدارہوچکے ہیں اور وہ مزید کسی کے جھوٹے دعوؤں اور وعدوں میں نہیں آئیں گے اوراس کا واضح ثبوت یہ ہے کہ اپوزیشن میں ہوتے ہوئے بھی چترال سے ڈیرہ اسماعیل خان تک پختون سرخ جھنڈے تلے جمع ہورہے ہیں یہی اے این پی کی بڑی کامیابی ہے ۔