مورخہ : 24.2.2016 بروز بدھ

اسلام اور تبدیلی کے نام پر صوبے کے عوام کو ورغلانے کا دور گزر چکا ہے۔سردار حسین بابک
موجودہ حکمرانوں کو صوبے کی نمائندگی اور مفادات سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ حکومتی دعوے جھوٹ پر مبنی ہیں۔
حکومت کی نااہلی کے نتائج صوبے کے عوام بھگت رہے ہیں۔ عوام جان چکے ہیں کہ ان کے حقوق کی نمائندہ جماعت اے این پی ہے۔
اب تمام اہم فیصلے تنظیموں کی مشاورت اور کارکنوں کی مرضی سے کیے جائیں گے ۔ واڑی اپر دیر میں اجتماع سے خطاب

پشاور ( پریس ریلیز) عوامی نیشنل پارٹی کے پارلیمانی لیڈر اور صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا کہ اسلام اور تبدیلی کے نام پر صوبے کے عوام کو ورغلانے اور دھوکہ دینے کا دور گزر چکا ہے۔ عوام جان چکے ہیں کہ اے این پی ہی ان کے حقوق کی نمائندہ جماعت ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ صوبے کے عوام کا پارٹی پر اعتماد مزید بڑھ گیا ہے اور 2018 کا الیکشن اے این پی کی کامیابی کا عملی ثبوت ہوگا۔
واڑی ضلع اپر دیر میں پارٹی کے تنظیمی عہدیداران ، ضلعی کابینہ ، صاحب الرائے مشران اور بلدیاتی نماندگان کے ایک نمائندہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ اسلام اور تبدیلی کے نام پر صوبے کے حقوق کا استعمال کیا گیا۔ یہی وجہ ہے کہ عوام کا ان جھوٹے دعوے پر اعتماد ختم ہو چکا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت غیر سنجیدہ رویے پر عمل پیرا ہے اور اپنی بنیادی ذمہ داریوں سے غافل ہے۔ حکمرانوں کو صوبے کے مسائل کے حل سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ حکومت محض میڈیا کے یکطرفہ پرورپیگنڈے پر عمل پیرا ہے اور حکومتی دعوؤں کا زمینی حقائق سے کوئی تعلق نہیں ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ نااہلی کا عالم یہ ہے کہ ترقیاتی بجٹ مسلسل لیپس ہو رہا ہے اور حکومت اس کے استعمال کے منصوبوں کی صلاحیت سے محروم ہے اور اس نااہلی کے نتائج صوبے کے عوام کو بھگتنا پڑ رہے ہیں۔
اُنہوں نے کہا کہ عوام جان چکے ہیں کہ اے این پی ہی ان کی نمائندگی کا حق احسن طریقے سے ادا کر سکتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ پارٹی پر عوام کا اعتماد دن بہ دن بڑھتا جا رہا ہے ۔ عوام پر یہ بات واضح ہو گئی ہے کہ ان کے حقوق اور مفادات کا تحفظ اے این پی کے بغیر دوسری کوئی قوت نہیں کر سکتی۔ اسی کا نتیجہ ہے کہ صوبے اور خطے میں قوم پرستی کی ہوا چل نکلی ہے اور نام و نہاد دعویداروں کے عزائم سب پر عیاں ہو چکے ہیں۔
اُنہوں نے مزید کہا کہ پارٹی کو اضلاع ، تحصیلوں اور وارڈز کی سطح پر منظم کیا جا رہا ہے ۔ تنظیموں کی ذمہ داریوں میں اضافہ کیا گیا ہے اور رابطوں میں تیزی لائی گئی ہے۔ تاکہ نچلی سطح پر پارٹی کو مزید فعال اور مضبوط بنایا جائے ۔ اُنہوں نے کہا کہ اب تمام اہم فیصلے تنظیموں کی مشاورت سے کیے جائیں گے اور کارکنوں کی رائے کو بنیادی اہمیت دی جائے گی۔ اجتماع سے ضلعی صدر راجہ امیر زمان ، صوبائی جائنٹ سیکرٹری نثار خان اور صوبائی نائب صدر جاوید خان یوسفزئی نے بھی خطاب کیا۔